جہلماہم خبریں

حقیقی آزادی مارچ شروع ہونے سے قبل ہی حکومت بوکھلاہٹ کا شکار ہے۔ فواد چوہدری

جہلم: فواد چوہدری نے کہا ہے کہ حقیقی آزادی مارچ شروع ہونے سے قبل ہی حکومت بوکھلاہٹ کا شکار ہے، پہلے عمران خان کی جعلی آڈیو ریلیز کی پھر گرفتار یوں کا سلسلہ شروع کیا، طارق شفیع کو کراچی، حامد زمان کو لاہور اور سینٹر سیف اللہ نیازی کوسینٹ سے گرفتار کیا۔

جہلم میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری نے کہا کہ جعلی آڈیو کا تو عوام کو پتا ہے ان کو ٹوٹے جوڑ کے چلانے کا کو شوق ہے اسکی کوئی حیثیت نہیں ہے لیکن سینٹ سے سینٹر کی گرفتاری پر چیئرمین سینٹ اور سینٹرز کو شرم سے ڈوب مرنا چاہیے جس طرح گرفتاری ہوئی سینٹ کی جس طرح بے حرمتی کی گئی اگر چیئرمین سینٹ میں ذرا سی بھی غیرت ہوتی تو استعفیٰ دے دیتے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ یہ اداروں کا بیڑہ غرق کررہے ہیں کل پوری کابینہ کو نوٹسز کروا کے بطور گواہ پیش ہونے کا کہا گیا یہ جو جمہوریت کی بات کرتے ہیں یہ بنیادی طور پر پاکستان کی جوسب سے بڑی فاشسٹ رجیم ہوئی اسکی نمائندگی کرتے ہیں اتنی بڑی فاشسٹ رجیم پاکستان کی تاریخ میں نہیں ہوئی،یہ بوکھلاہٹ کا شکار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کل شہباز شریف نے جس طرح بوکھائی ہوئی پریس کانفرنس کی اس سے اندازہ ہوتا ہے یہ کتنے ڈرے ہوئے ہیں، آج کی گرفتاریوں سے جس طرح ماحول خراب کیا گیا لانگ مارچ کی تاریخ اور قریب آگئی ہے حقیقی آزادی مارچ میں لاہور سے فیض آباد اور پشاور سے اسلام آباد تک سر ہی سر ہوں گے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ حکومت اور رانا ثناء اللہ کے بس کی بات نہیں کہ اس طوفان کو روک سکیں،نواز شریف اور مریم نواز نے واپس نہیں آنا اور کابینہ کے افراد آئی رپورٹوں سے بھاگتے دکھائی دیں گے، کئی ائیر پورٹ سے پکڑے جائیں گے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ خدشہ تھا اسحاق ڈار کے آنے سے آئی ایم ایف پروگرام کو شدید خطرات لاحق ہوں گے وہ ہی ہوا ان کے بیان سے کہ دیکھ لیں گے اس خدشے کا اظہار ہے اسحاق ڈالر کے آنے سے ملکی معیشت گھبیرتا ہوتی جارہی ہے یہ سب کچھ مفتاع اسماعیل پے ڈال کے خود نکلنا چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عدالتوں کے بے شمار فیصلے غلط اور بے شمار درست ہوتے ہیں یہ کہنا کہ راجہ پرویز اشرف اسپیکر ہیں اور قاسم سوری نہیں ہیں عجیب و غریب بات ہے جو پاکستان کے حالات خراب ہیں اس میں غیر منتخب دفاتر اور اداروں نے بڑا کردار ادا کیا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button