جہلم

جہلم شہر سمیت ضلع بھر میں غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کا رواج چل نکلا

جہلم: شہر سمیت ضلع بھر میں غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کا رواج چل نکلا، پلاٹ نمبر تبدیل، لے آؤٹ پلان کی خلاف ورزی بنارسی ٹھگ غریب شہریوں کی زندگی بھر کی جمع پونجی سے محروم کرنے لگے، محکمہ مال سمیت قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کارکردگی سوالیہ نشان بن گئی۔

تفصیلات کے مطابق شہر سمیت ضلع بھر میں غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کی بھرمار ہو رہی ہے، ہولڈنگ بورڈ زلگا کر سوسائٹیوںکی تشہیر کی جارہی ہے جس کی وجہ سے بنجر زمینوں کی قیمتوں میں بھی کئی گنا اضافہ ہو چکا ہے، پراپرٹی ایڈوائزر چکنی چپڑی باتوں اور سہانے خواب دکھا کر شہریوں کو زندگی بھر کی جمع پونجی سے محروم کر رہے ہیں۔

محض چند برس قبل ضلعی انتظامیہ کے احکامات کی روشنی میں میونسپل کمیٹی کے شعبہ انکروچمنٹ نے اسسٹنٹ کمشنر کی سرپرستی میں غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے گیٹ سیل کئے اور عوام سے ہونے والے فراڈ پر ایکشن لیالیکن حکومت کی تبدیلی کے بعد بااثر افراد نے ایک بار پھر دھڑلے سے خود ساختہ قائم کی گئی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے پلاٹس کی فروخت کا کام شروع کر رکھا ہے۔

واضح رہے کہ این اوسی کے بغیر متعدد افراد پلاننگ کر کے ان خود ساختہ سوسائٹیز کا نام دیتے ہیں اور جی ٹی روڈ سمیت سوشل میڈیا پر تشہیری مہم شروع کر دیتے ہیں، اس طرح قرب و جوار کے لوگ بغیر تحقیق کے ٹکوں کے بھاؤ خریدی جانے والی اراضی لاکھوں روپے فی مرلہ کے حساب سے خرید رہے ہیں جبکہ میونسپل کمیٹیوں میں ایسی سوسائٹیوں کا نام تک موجود نہیں۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ انتظامیہ کی سرپرستی کے بغیر ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے مالکان کسی صورت سوسائٹی کی پلاننگ نہیں کر سکتے اور نہ ہی 3,5,7,10 مرلے اور 1کنال کے پلاٹ فروخت کرسکتے ہیں۔

شہریوں نے وزیر اعلی پنجاب، چیف سیکرٹری پنجاب، سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو، کمشنر راولپنڈی ، ڈپٹی کمشنر سے مطالبہ کیا ہے شہر سمیت ضلع بھر میں قائم ہونے والی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے نام پر عوام سے کھلواڑ کرنیوالے بااثر افراد کے خلاف فوجداری مقدمات درج کرائے جائیں تاکہ سادہ لوح شہری نوسر بازوں کی لوٹ مار سے محفوظ رہ سکیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button