جہلم

موسم سرما کی آمد آمد، گرم کپڑوں اور جوتوں کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ

جہلم: موسم سرما کی آمد آمد، گرم کپڑوں اور جوتوں کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ ، غریب اورمتوسط طبقہ کے افراد کے لئے تن کو ڈھانپنا بھی چیلنج بن گیا، جبکہ طالبعلموں کے یونیفارم کی قیمتیں بھی آسمان سے باتیں کرنے لگیں۔

تفصیلات کے مطابق موسم کے کروٹ بدلتے ہی سردیوں میں زیب تن کئے جانے والے ملبوسات اور جوتوں کی قیمتوں میں دکانداروں نے خود ساختہ اضافہ کرکے مہنگائی کے ستائے شہریوں کی جیبوں پر ڈاکے ڈالنے کاعمل شروع کر رکھا ہے۔

مذکورہ اشیاء کی قیمتوں میں کئی گنا اضافہ ہو جانے کی وجہ سے موجودہ حالات میں متوسط اور غریب طبقہ کے افراد کے لئے خود کوسردی سے محفوظ رکھنا کسی چیلنج سے کم نہیںاوردوسری جانب پرائیویٹ تعلیمی اداروں کی انتظامیہ نے بھی مہنگائی کے ستائے والدین پر اپنی مرضی مسلط کرنا شروع کررکھی ہے۔

آئے روز طلبہ کے یونیفارم میں معمولی تبدیلی کرکے نئی سے نئی یونیفارم متعارف کروا کر بچوں کو نئی یونیفارم خریدنے کے احکامات جاری کر دیئے جاتے ہیں ، جس کی وجہ سے کم آمدنی والے والدین کیلئے بچوں کی نئی جرسیاں سوئیٹر، یونیفارم اور جوتے خریدنا کسی صورت بھی آسان دکھائی نہیں دیتے۔

مہنگائی کی چکی میں پسنے والے شہریوں نے گرم کپڑوں، جوتوں اور بچوں کی یونیفارم کی قیمتوں میں بے جا اضافہ پر کہا کہ ہر دکاندار اپنی دکان کے کرایہ جات اور ملازمین کے اخراجات کے حساب سے مذکورہ اشیاء کی قیمتیں مقرر کر رکھی ہیں۔

شہریوں نے مزید کہا کہ غریب اور متوسط طبقہ کو ریلیف فراہم کرنے کے لئے کپڑے اور جوتوں کے نرخ ان کی کوالٹی کے مطابق مقرر کئے جائیں اور یونیفارم کی تبدیلی کو ختم کیا جائے تاکہ غریب سفید پوش طبقہ سے تعلق رکھنے والے افراد اپنی بچیوں اور بچوں کو زیورِ تعلیم سے آراستہ کر سکیں ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button