جہلم

جہلم ریلوے اسٹیشن پر متعدد ریل گاڑیوں کے سٹاپ بند ہونے سے مسافروں کو مشکلات کا سامنا

جہلم: ریلوے اسٹیشن ایک صدی سے زیادہ قدیمی ریلو ے اسٹیشن ہے، ایک وقت تھا، جب جہلم ریلوے اسٹیشن پر ریل گاڑیو ں کی آمد و رفت کے باعث آباد ترین ریلوے اسٹیشن گردانہ جاتا تھا۔

آج نئی جدتوں میں اضافے کے باوجود جہلم کا تاریخی ریلوے اسٹیشن قرب وجوار میں قائم صنعتی کارخانے اوراعلیٰ تعلیمی ادارے یونیورسٹیاں، جہاں زندگی کے مختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے لوگوں کی بڑی تعداد رہائش پذیر ہے ، مگر جہلم ریلوے اسٹیشن پر ما سوائے چند ایک مسافر گاڑیوں کے علاوہ اہم گاڑیوں کا کوئی سٹاپ نہیں۔

حالانکہ پشاور تا کوئٹہ براستہ جہلم جانے والی گاڑی جسے جعفر یکسپریس کا نام دیا گیا ہے اور دوسری گاڑی پشاو ر تا کراچی رحمان بابا ایکسپریس براستہ جہلم ریلوے اسٹیشن سے گزر کر ہی منزل کو پہنچ پاتی ہیں، رحمان بابا ایکسپریس پنجاب اور سندھ کے علاقوں میں آنیوا لے شدید سیلاب کے باعث گزشتہ تین مہینوں سے اس کا سٹاپ بھی بند کر دیا گیا تھا ،جو کہ آج تک بحال نہ ہو سکا۔

یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ گزشتہ ادوار میں جن مسافر گاڑیوںکا سٹاپ یہاں پر ہوتا تھا، اس سے کراچی، لاہور ، گوجرانوالہ ، گجرات ، کھاریاں، لالہ موسیٰ سمیت دیگر شہروں میں ملاز مت کرنے والے لوگ جو یہاں رہائش پذیر ہیں ان کے اپنے اپنے علاقوں میں آنے جانے میں جو سفری مشکلات تھیں۔

متذکرہ گاڑیوں کی وجہ ہے ملازمت پیشہ لوگوں اور جہلم کے لوگوں کو بھی سفرکرنا آسان ہوتا تھا اور ساتھ ساتھ جہلم ریلوے اسٹیشن سے کرایوں کی مد میں ٹکٹ کی وصولی محکمہ ریلوے کی آمدن میں بھی اضافے کا اچھا ذریعہ تھا، معلوم نہیں موجودہ حکومت نے کن وجوہات کی بنا پر محکمہ ریلوے کو سدھارنے کی بجائے جہلم سمیت جور یلو ے اسٹیشن جن میں پنڈدادنخان ، کھیوڑہ ، غریب وال، خوشاب جو کافی اچھی آمدن کے ذریعہ تھے پر تمام مسافر گاڑیوں کو بند کرکے ریلوے کی ستیاناس کردی ہے ۔ جس کے باعث جہلم سمیت ضلع کی تحصیل پنڈدادنخان کے متعد دریلوے سٹیشن ویران ہو کر رہ گئے ہیں۔

جہلم ریلوے اسٹیشن ایسے مصروف ترین علاقے کے درمیان میں واقع ہے، جہاں لوگوں کی بہت بڑی آبادی را ولپنڈی سمیت دیگر شہروں تک روزانہ کی بنیاد پر سفر کرنے کیلئے ہر وقت موجود رہتی ہے اور اکثر مسا فر لاہور پہنچ کر ریلوے کے سفر کے ذریعے ہی دوسرے چھوٹے بڑے شہروں تک اپنی رسائی ممکن بناتے تھے ۔

موجودہ وفاقی وزیر ریلوے سعد رفیق جنہیں ریلوے کا ارسطو کہا جاتا ہے انہوں نے بھی جہلم ریلوے اسٹیشن اور ضلع جہلم کی تحصیل پنڈدادنخان میں موجود درجنوں سے زائد ریلوے اسٹیشن نامعلوم وجوہات کی بنیاد پر بند کروا رکھے ہیں ، جس کیوجہ سے علاقہ مکینوں کو سفری سہولیات میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہاہے۔

ضلع جہلم کے عوام نے وزیراعظم پاکستان ، چیف جسٹس آف پاکستان ،وفاقی وزیر ریلوے سے مطالبہ کیاہے کہ رحمان باباایکسپریس، نائٹ کوچز کے جہلم میں سٹاپ بحال کئے جائیں اور جہلم کی تحصیل پنڈدادنخان میں مسافر ٹرینوں کی دوبارہ سے آمدورفت شروع کروائی جائے تاکہ علاقہ مکینوں کو پیش آنے والی سفری مشکلات میں کمی واقع ہو سکے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button