جہلم

جہلم میں کم عمراورعمر رسیدہ رکشہ ڈرائیورز انسانی جانوں کیلئے خطرات بن گئے

جہلم: کم عمراورعمر رسیدہ رکشہ ڈرائیورز انسانی جانوں کیلئے خطرات بن گئے, ٹریفک بہاؤ میں بھی مشکلات، بازاروں میں پیدل چلنا محال،اکثریت ڈرائیونگ لائسنس سے محروم، بعض کے تو شناختی کارڈ ہی نہیں بنے، سڑک کے دونوں اطراف فروٹ ، لنڈا فروخت کرنیوالوں کی ریڑھیاں بھی دکانوں کاروپ دھارچکیں،گزرنے کے راستے مسدود ہیں۔

تفصیلات کے مطابق کم عمر، عمررسیدہ چنگ چی رکشہ ڈرائیورز انسانی زندگیوں کیلئے خطرہ بن گئے، شہر اور گردونواح میں چنگ چی رکشاؤں کی تعداد میں ہر گزرتے دن کیساتھ تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے، چنگ چی رکشے چلانے والوں کی اکثریت کے پاس ڈرائیونگ لائسنس ہی نہیں جبکہ بعض کے تو شناختی کارڈ بھی نہیں بنے ہوئے۔

شہر بھر میں جگہ جگہ چنگ چی رکشاؤں کے اڈے قائم ہو چکے ہیں ،شہر کے چوک چوراہے رکشہ اسٹینڈ میں تبدیل ہو کر رہ گئے ہیں۔ چنگ چی رکشے ٹریفک کے بہاؤ میں بھی مشکلات کا سبب بن رہے ہیں۔ بازاروں میں شہریوں کا پیدل چلنامحال ہو چکاہے۔

کمسن ڈرائیور تیز رفتاری سے رکشے چلاتے دکھائی دیتے ہیں اور اکثر اوقات زیادہ سواریاں بٹھانے کے لالچ میں حادثات کا باعث بھی بنتے ہیں۔دوسری طرف پھل فروٹ ، سبزیاں ، مچھلیاں ، لنڈا فروخت کرنیوالوں کی ریڑھیاں سڑک کے دونوں اطراف کثرت سے پائی جاتی ہیں۔ متعدد ریڑھیاں تو دکانوں کا روپ دھار چکی ہیں۔

سڑکوں پر جگہ مخصوص کر کے با اثر ریڑھی بانوں نے مستقل بنیادوں پر اڈے قائم کر رکھے ہیں جہاں سے میونسپل کمیٹی کے اہلکار باقاعدگی کے ساتھ بھتہ وصول کرکے تجاوزات قائم کرنے والوں کی پشت پناہی کر رہے ہیں جس کی وجہ سے گزرنے کے راستے مسدود ہو کر رہ گئے ہیں۔

شہریوں نے ایڈمنسٹریٹر میونسپل کمیٹی جہلم، چیف آفیسر میونسپل کمیٹی، ڈی ایس پی ٹریفک پولیس سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button