جہلماہم خبریں

محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن نے جہلم میں ٹوکن ٹیکس ڈیفالٹر کیخلاف گرینڈ آپریشن کا آغاز کر دیا

جہلم: محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کی موٹر رجسٹریشن اتھارٹی نے جہلم سمیت پنجاب بھر میں ٹوکن ٹیکس ڈیفالٹر کیخلاف گرینڈ آپریشن کا آغاز کردیا۔

محکمہ ایکسائز نے موٹر برانچ کی ریکوری بہتر بنانے کا فیصلہ کرتے ہوئے64 ہزار 999 سرکاری، نیم سرکاری اور بڑی پرائیویٹ کمپنیوں کے ٹوکن ٹیکس ڈیفالٹرز گاڑیوں کے مالکان کیخلاف کریک ڈاؤن کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کی موٹر رجسٹریشن اتھارٹی کے اعدادوشمار کے مطابق 64 ہزار 999 گاڑیوں کو آن لائن سسٹم پر بلاک کر دیا گیا تھا، جس کے بعد بلاک کی گئی کسی بھی گاڑی کی خرید و فروخت اور ٹرانسفر اس وقت تک نہیں ہو سکتی جب تک گاڑی جس کی ملکیت ہے وہ ٹوکن ٹیکس ادا نہیں کرے گا۔

ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن نے سال 2020,21,22 کی 64 ہزاز 999 ٹوکن ٹیکس ڈیفالٹر گاڑیوں کو اپنے سسٹم میں بلاک کر دیا ہے ان نادہندگان کے ذمہ 3 ارب دس کروڑ سے زائد رقم واجب الادا ہے جس کی ریکوری ، موٹر رجسٹریشن اتھارٹی کی ذمہ داری ہے ، ٹیکس ادا نہ ہونے سے محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کو اپنے ریونیو ٹارگٹ پورے کرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

محکمہ ایکسائز نے چیسیز نمبر تبدیلی، مشکوک کاغذات والی اور بڑی ٹیکس ڈیفالٹرگاڑیاں قبضے میں لینے کا بھی حتمی فیصلہ کیا ہے، محکمہ ایکسائز کی جانب سے سمری لکھ دی گئی جس کے مطابق ٹمپرڈ گاڑیوں کے مالکان کے خلاف بھی فوجداری مقدمات درج کروائے جائیں گے۔

محکمہ ایکسائزنے دوسرے صوبوں کے طرز پر گاڑیوں کی بندش کے حوالے سے سیزر اینڈ ڈسپوزل رولز کی منظوری کی سمری حکومت کو بھجوا دی ہے جس کی منظوری کے بعد ایکسائز روڈ چیکنگ کے دوران کارروائیوں کا آغاز کردے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button