پنڈدادنخانکھیوڑہاہم خبریں

پنڈدادنخان کی عوام حکومت کی جانب سستے آٹے کے لیے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور

پنڈدادنخان: انتظامیہ کی نااہلی عوام حکومت کی جانب سستے آٹے کے لیے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور، واڑہ بلند خان کے عوام کے بعد کھیوڑہ کے شہری بھی خوار ہونے لگے، سوشل سکیورٹی ہسپتال کے گراؤنڈ میں آٹے کا کہہ کر گاڑی روڈ پر لگا دی گئی، غلام حسین نامی ملازم نے خواتین سے ہتک آمیر رویہ سے پیش آنا وطیرہ بنا لیا، اسسٹنٹ کمشنر پنڈدادنخان ملازمین اور بلیک میلرمافیا کے سامنے بے بس، اگر انتظامیہ کی جانب سے بے حسی ختم نہ کی گئی تو شدید احتجاج کریں گے۔ اہل علاقہ

تفصیلات کے مطابق حکومت پنجاب کی جانب سے عوام کو سستے آٹے کی فراہی کے لیے آبادی کے لحاظ سے ضلع جہلم کے دوسرے بڑے شہر کھیوڑہ کے عوام سستے آٹے کے حصول کے لیے رُل گئے، انتظامیہ کی ناقص حکمت عملی کے باعث عین وقت پر آٹے کی گاڑی پوائنٹ بدلنا معمول بن گیا، اس سے قبل بھی واڑہ بلند خان کے لیے آٹے کی گاڑی کا اعلان کیا گیا لیکن عوام کو آٹا نہ دیا گیا جس کی وجہ سے سینکڑوں خواتین سارا دن انتظار کے بعد خالی ہاتھ واپس لوٹ گئی۔

گزشتہ روز کھیوڑہ شہر میں بھی سوشل سکیورٹی کے گراؤنڈ میں آٹے کی گاڑی آنا تھی عوام صبح سویرے وہاں اکٹھے ہوئے لیکن انتظامیہ نے سفید پوشوں اور بلیک میلر مافیا کی مداخلت سے آٹا پیٹرول پمپ کے ساتھ سڑک پر تقسیم کرنا شروع کردیا جبکہ ذارئع نے انکشاف کیا ہے کہ انتظامیہ کی ملی بھگت سے سستا آٹا من پسند لوگوں کو دیا جارہا ہے۔

ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ آٹا تقسیم کرنے والی گاڑی پر غلام حسین نامی ملازم خواتین سے ہتک آمیز رویہ سے پیش آتا ہے اور آٹے کی بے حرمتی کرتا ہے، انتظامیہ کی بے حسی اور ناقص حکمت عملی کے باعث سستے آٹے کی فراہمی بری طرح ناکام ہوچکی ہے۔ اہل علاقہ نے کمزور انتظامیہ جوکہ سفید پوشوں اور بلیک میلر مافیا کے ہاتھوں یرغمال بنی ہوئی ہے۔

اس ساری صورت حال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کمشنر راولپنڈی اور ڈی سی جہلم سے مطالبہ کیا ہے کہ انتظامیہ کی زیر نگرانی بلا تفریق اور بنا کسی مداخلت کے ہر وارڈ میں سستے آٹے کی فراہمی یقینی بنائی جائے تا کہ عوام تک حکومت کی جانب سستے آٹا بلا تقریق پہنچ سکے اور عوام سہولت سے مستفید ہو سکیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button