جہلم

جہلم کے ہوٹل مالکان نے ایل پی جی کی بلیک مارکیٹنگ روکنے کا مطالبہ کر دیا

جہلم: ہوٹل مالکان نے ایل پی جی کی بلیک مارکیٹنگ روکنے کا مطالبہ کر دیا، سوئی گیس پریشر میں کمی اور ایل پی جی کی عدم دستیابی کی وجہ سے ہوٹلنگ شدید متاثر ہو رہی ہے۔

ان خیالات کا اظہار شہر کے مختلف ہوٹل مالکان نے اخبارنویسوں سے خصوصی گفتگو کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا کہ ایل پی جی کی قیمتوں کی بلیک مارکیٹنگ کی وجہ سے ہوٹل انڈسٹری تباہی کے دہانے پر پہنچ گئی ہے ، سوئی گیس کے کم پریشر کی وجہ سے ریسٹورنٹ ایل پی جی سلنڈر گیس استعمال کرنے پر مجبور ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ایل پی جی پلانٹ مالکان نے سیلاب کو بہانہ بنا کر ایل پی جی کی شارٹیج اور بلیک مارکیٹنگ شروع کر رکھی ہے جس کی وجہ سے بیشمارہوٹل بند ہو چکے ہیں اور کورونا کے بعد ایک بار پھر ہوٹلز کے بند ہونے سے سینکڑوں ملازمین بیروزگار ہونے کا اندیشہ لاحق ہو چکا ہے ۔اگروفاقی حکومت نے سوئی گیس کے یکساں پریشر اور ایل پی جی سلنڈر کی فراہمی یقینی نہ بنائی تو جہلم سمیت ملک بھر میں لاکھوں ریسٹورنٹ ملازمین بیروزگار ہو جائیں گے۔

ہوٹل مالکان نے کہاکہ وزیراعظم پاکستان بیرون ملک کے دوروں سے فارغ ہو کر ملک کے اندر جنم لینے والے مسائل پر توجہ دیں تاکہ ہوٹل مالکان کو پیش آنے والی مشکلات کا خاتمہ ممکن ہو سکے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button