مہنگائی اور بیروزگاری نے جہلم کے شہریوں کو ذہنی مریض بنا دیا

جہلم: مہنگائی، بیروزگاری اور ناانصافی سمیت دیگر معاشرتی مسائل میں اضافے کے باعث جہلم شہر سمیت ضلع بھر میں نفسیاتی مریضوں کی تعداد بڑھنے لگی، درجنوں سے زائد شہریوں نے معالجین سے رجوع کرنا شروع کر رکھا ہے۔

جہلم پریس کلب کے سروے کے مطابق نفسیاتی امراض میں تیزی سے اضافہ ہو رہاہے ، شہرمیں اس وقت نفسیاتی مریضوں کے علاج معالجہ کے لئے 2 سے زائد ہسپتال موجود ہیں جہاں مریض ذہنی و نفسیاتی علاج کیلئے رجوع کرتے ہیں۔

چند سالوں میںنفسیاتی مریضوں کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہواہے جن میں خواتین و بچے، نوجوان بھی شامل ہیں ، دیہی علاقوں سے آنے والے مریضوں کی تعداد شہری علاقوں سے نسبتاًکم ہے جن میں بیشتر مریض ذہنی دباؤ اور معاشی بدحالی کا شکار ہوتے ہیں۔

طبی ماہرین کے مطابق ہر تیسرا شہری کسی نہ کسی نفسیاتی مسئلے سے دوچار ہے ، جس کی بنیادی وجہ غربت میں اضافہ، مہنگائی ، بیروزگاری ،لاقانونیت ، لوڈشیڈنگ ، آپسی تنازعے سمیت انصاف کا نہ ملنا ، شادی میں تاخیر، گھریلوجھگڑے ، ازدواجی مسائل بھی ذہنی و نفسیاتی امراض کا باعث بن رہے ہیں۔

اکثر مریضوں میں یہ مرض کم شدت کا ہوتا ہے ، 5 فیصد میں مرض کی شدت بڑھنے سے شدت پسندی کے واقعات بھی جنم لیتے ہیں جو خودکشیوں کا باعث بن رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button