جہلم

جہلم کے گلی محلوں اور سڑکوں پر سپیڈ بریکر قائم، شہری حادثات کا شکار ہونے لگے

جہلم: شہریوں نے گلی محلوں اور سڑکوں پر اپنا قانون نافذ کر دیا، ڈپٹی کمشنر کی اجازت لیے بغیر جہلم کے کئی علاقوں میں غیر ضروری خطرناک سپیڈ بریکر بننے سے موٹرسائیکل سوار گرنے لگے، انتظامیہ بھی خاموش ہے۔

تفصیلات کے مطابق جہلم کے کئی گلیوں محلوں بازاروں اور سڑکوں پر خطرناک قسم کے سپیڈ بریکر شہری بغیر اجازت کے بنانے لگے اتنے خطرناک سپیڈ بریکرز سے موٹرسائیکل سوار اور چنگ چی رکشہ والے حادثات کا شکار ہونے لگے۔

شمالی محلہ میں تو ایک ایسی سڑک ہے جہاں پر ہر گھر کے سامنے غیر قانونی سپیڈ بریکر بنائے گئے ہیں، متعدد شہریوں نے اپنا قانون نافذ کر دیا جس سے اکثر موٹر سائیکل سوار اپنی فیملیز سمیت گر حادثہ کا شکار ہو چکے ہیں جبکہ رات کو خاص کر یہ سپیڈ بریکر نظر بھی نہیں آتے اور شہری حادثات کا باعث بننے لگے۔

شہریوں نے گلی محلے اور سڑکوں پر اپنا قانون نافذ کر دیا کوئی بھی پوچھنے والا نہیں جبکہ آرام دین بازار میں ایک دکاندار نے بغیر اجازت لیے ایک خطرناک سپیڈ بریکر بنا رکھا جس سے کچھ روز پہلے ایک چنگ چی رکشہ الٹ گیا اور اس میں سوار دو خواتین زخمی بھی ہوگئیں جبکہ یہ سپیڈ بریکر رات کو بالکل ہی نظر نہیں آتا۔

کسی بھی شہری کو سپیڈ بریکر بنانے کے قواعد کا کچھ پتہ نہیں صرف اپنی اجارہ داری کو قائم رکھتے ہوئے اور انتظامیہ کی رٹ کو چیلنج کرتے ہوئے انہوں نے از خود جاں لیوا سپیڈ بریکر بنا رکھے ہیں جو کہ شہریوں کے لیے وبال جان بنتے جا رہے ہیں خاص طور پر موٹر سائیکل پر بیٹھی خواتین اس کا زیادہ شکار ہو رہی ہیں جو کہ بڑے بڑے سپیڈ بریکر کی وجہ سے موٹرسائیکل چلانے والے اکثر اوقات ان سپیڈ بریکر پر توازن برقرار نہیں رکھ سکتے اور گر جاتے ہیں۔

شہریوں نے ڈپٹی کمشنر نعمان حفیظ اور ایڈمنسٹریٹر، سی او میونسپل کمیٹی سے مطالبہ کیا ہے کہ غیر قانونی طور پر بنے سپیڈ بریکرز کو بنانے والوں کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے کیونکہ ان سے دن بدن حادثات بھی بڑھتے جارہے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button