جہلم

گریجوایشن تک مفت تعلیم کے حکومتی دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے

جہلم: گریجوایشن تک مفت تعلیم کے حکومتی دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے، والدین سود پر قرضے لیکر بچوں کو تعلیم دلوانے پر مجبور، والدین کا وزیراعلیٰ پنجاب سے گریجوایشن تک پڑھائی مفت کرنے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی نے رواں سال اپنے بیان میں کہا تھاکہ پہلے میٹرک تک تعلیم مفت دی جا رہی تھی، اب پنجاب حکومت نے گریجویشن تک مفت تعلیم دینے کا اعلان کر دیا ہے ، لیکن تاحال اس پر عملدرآمد نہ ہو سکا۔

اس حوالے سے زیر تعلیم طلباء و طالبات کے والدین نے اخبارنویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ 15 اگست 2022 کو سینیٹر اعجاز چوہدری اور چوہدری پرویز الٰہی کی ملاقات کے موقع پر وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی نے کہا تھا کہ چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمر ان خان کے ویژن کے مطابق پنجاب کی ترقی و خوشحالی کا حقیقی دور شروع ہو چکا ہے۔ نوجوان نسل خاص طور پر طلباء و طالبات ہماری توجہ کا خصوصی مرکز و محور ہیں۔پہلے میٹرک تک ہم نے تعلیم مفت کی تھی، اب دوبارہ پنجاب حکومت سنبھالنے کے بعد گریجویشن تک مفت تعلیم کر رہے ہیں ۔لیکن ان کا یہ بیان محض سیاسی بیان تک ہی محدود ہو کر رہ گیا ہے۔

والدین کا مزید کہنا ہے کہ مہنگائی کے اس پرفتن دور میں بچوں کو تعلیم دلوانا کسی چیلنج سے کم نہیں ، یونیورسٹیوں کی فیسیں اتنی بڑھ چکی ہیں کہ سود پر قرضے لیکر بچوں کی فیسیں ادا کررہے ہیں ۔ والدین نے وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی سے گریجوایشن تک پڑھائی مفت کروانے اور باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کروانے اور اس پر عملدرآمد کروانے کا مطالبہ کیا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button