سعودی عرب کا روزگار کی فراہمی کا نیا منصوبہ

ریاض: سعودی عرب نے روزگار کی فراہمی کا ایک نیا منصوبہ تشکیل دیا ہے جس کے تحت کچرے کی ری سائیکلنگ سے ایک لاکھ سے زائد ملازمتیں پیدا ہوں گی، مملکت میں ہونے والی بارشوں میں اضافے اور مصنوعی بارش پروگرام، 99 ہزار ہیکٹر سے زیادہ رقبے پر کاشت اور 50 ملین کے قریب پودوں کی شجر کاری کے باعث گرد آلود ہواؤں اور طوفان میں کافی حد تک کمی واقع ہوگئی۔

سعودگی گزٹ کے مطابق سعودی عرب نے 95 فیصد تک کچرے کی ری سائیکلنگ کا منصوبہ بنایا ہے، جس پر سعودی وزارت ماحولیات، پانی اور زراعت نے کام کیا اور ری سائیکلنگ کا ایسا پلان تیار کیا ہے، جس سے قومی پیداوار میں 120 ارب ریال کا اضافہ ہوگا۔

سرکاری خبررساں ادارے ’ایس پی اے‘ کا کہنا ہے کہ وزارت ماحولیات نے بتایا کہ اس منصوبے سے سالانہ 100 ملین ٹن تک کچرے کی ری سائیکلنگ ہوگی، جس سے سعودی نوجوانوں کو ایک لاکھ سے زیادہ ملازمتیں ملیں گی، وزارت کی جانب سے گزشتہ برس 65 سے زیادہ اقدامات اور 55 ارب ریال سے زیادہ کی سرمایہ کاری کی گئی۔

وزارت نے اپنی ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ سعودی عرب میں اس وقت کچرے کی ری سائیکلنگ کا تناسب 3 سے 4 فیصد سے زیادہ نہیں ہے جو دنیا میں سب سے کم حد ہے، وزارت نے 50 ملین سے زائد پودوں کی شجر کاری کی اور 90 ہزار ہیکٹر سے زیادہ کا رقبہ محفوظ کیا اور مملکت میں گردو غبار میں ہونے والی کمی کے حوالے سے آنے والے نتائج انتہائی حوصلہ افزا ہیں، محفوظ قومی جنگلات کی وجہ سے گردو غبار کا دائرہ 10 فیصد تک محدود ہوچکا ہے۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button