جہلم شہر کے عین وسط شاندار چوک میں غیر قانونی رکشہ اسٹینڈز اور ریڑھی بازار قائم

جہلم شہر کے عین وسط شاندار چوک میں غیر قانونی رکشہ اسٹینڈز اور ریڑھی بازار قائم، جابجا رکاوٹوں نے عوامی آمد و رفت میں مسائل پیدا کر رکھے ہیں، موجودہ حالات میں معمولات زندگی شتر بے مہار کا روپ دھار چکے ہیں۔ میونسپل کمیٹی ، ٹریفک پولیس، آرٹی اے سیکرٹری سمیت قانون نافذ کرنے والے ذمہ داران خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق جہلم شہر میں واقع شاندار چوک، ریلوے روڈ،تحصیل روڈ، اولڈ جی ٹی روڈ، سول لائن روڈ پر رکشہ ڈرائیوروں نے ٹریفک پولیس کی سرپرستی میں رکشے کھڑے کرکے عوامی مشکلات میں اضافہ کر رکھا ہے ، جس کی وجہ سے دوسرے شہروں سے آنے والے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے جبکہ شاندار چوک کے چاروں اطراف کھڑے ہونے والے رکشوں کیوجہ سے فائربرگیڈ، ایمبولنسسز کی گاڑیوں کو بھی شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ سرکاری اداروں میں کام کاج کی غرض سے آنے والے سائلین سکولو ں ،کالجز میں زیر تعلیم طلباء و طالبات کو رکشوں ور ریڑھی بانوں کیوجہ سے پیدل چلنے میں بھی دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ میونسپل کمیٹی ، آرٹی اے اور ٹریفک پولیس نے شہریوں کے مسائل میں کمی کرنے کی بجائے چپ سادھ رکھی ہے شہر کی سڑکوں کو کشادہ کرنے کی بجائے غیر قانونی رکشہ اسٹینڈ اور ریڑھی بازار میں تبدیل کرر کھا ہے۔

شہریوں نے نگران وزیراعلیٰ پنجاب، آئی جی پنجاب، ایڈیشنل ڈی آئی جی ٹریفک، صوبائی محتسب پنجاب سے مطالبہ کیاہے کہ جہلم شہر میں تجاوزات کے خلاف آپریشن کروایا جائے اور ٹریفک پولیس کو غیر قانونی قائم ہونے والے رکشہ اسٹینڈ ختم کروانے کے احکامات جاری کئے جائیں تاکہ شہر کی سڑکیں کشادہ اور شہریوں کی مشکلات میں کمی واقع ہو سکے ۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button