پاکستانی ڈاکٹر راشد ر یاض دوران پرواز خاتون کی جان بچاکر ہیرو بن گئے

لندن: پاکستانی ڈاکٹر راشد ریاض نے دوران پرواز ایک ضعیف خاتون کی جان بچائی کر ہیرو بن گئے ہیں۔

انٹرویو دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ بطور ڈاکٹر وہ ہمیشہ لوگوں کی مدد کرنےکے لئے تیار ہوتے ہیں۔ ڈاکٹر راشد ریاض نے بتایا کہ وہ 9جنوری کو برمنگھم سے اٹلی اپنی اسکینگ ہالیڈے کیلئے جا رہے تھے کہ طیارے میں اعلان ہوا کہ کیا طیارے پر کوئی ڈاکٹر موجود ہے جس پر انہوں نے فوراً اپنی خدمات پیش کردیں تو پتہ چلا کہ ایک پاکستانی خاتون کی طبیعت خراب ہوگئی ہے اور انہیں سانس لینے میں مشکل پیش آرہی ہے۔

خاتون کے شوہر نے مجھے ان کی صحت سے متعلق بتایا کہ وہ دل کے مرض کی مریضہ ہیں۔ اس دوران میں نے دیکھا کہ طیارے کے عملہ کے ایک رکن نے ایپل واچ پہنی ہوئی ہے میں نے ان سے درخواست کی کہ وہ واچ خاتون کو پہنا دی کیونکہ آج کل ان گھڑیوں میں دل کی دھڑکن اور آکسیجن لیول کو چیک کرنے کی ایپس بھی موجود ہوتی ہیں۔

اس دوران میں نے آکسیجن سلنڈر طلب کیا تو وہ بھی مجھے فوراً مہیا کردیا گیا، ان خاتون کی آکسیجن لیول کافی کم نظر آرہا تھا، سلنڈر لگانے کے بعد ان کی حالت بہتر ہونا شروع ہوگئی، اس موقع پر آکسیجن دینا بہت ضروری تھا بصورت دیگر چند منٹ میں موت بھی واقع ہوسکتی ہے۔

ڈاکٹر ریاض نے بتایا کہ طیارے کا عملہ انتہائی مددگار تھا انہوں نے ہر وہ مدد فراہم کی جس کی میں نے ان سے درخواست کی۔ انہوں نے خاتون کیلئے درد کش ادویات بھی فوراً مہیا کیں۔

ڈاکٹر ریاض نے بتایا کہ یہ پہلی مرتبہ نہیں ہے کہ دوران پرواز انہوں نے کسی بیمار شخص کی مدد کی ہے بلکہ وہ اس سے قبل تین مرتبہ طیارے میں بیمار افراد کی مدد کرچکے ہیں۔ اس سے قبل بھی پی آئی اے، امریکن ائرلائن اور ورجن اٹلانٹک میں بھی میڈیکل کی صورت میں مدد فراہم کر چکا ہوں۔ بطور ڈاکٹر میں ہمیشہ بیمار افراد کی مدد کیلئے تیار رہتا ہوں، اس پرواز سے چھ روز قبل ہی میں آن کال ڈاکٹر کے طور پر کام کررہا تھا اور ایمرجنسی کی صورت میں کسی کی جان بچا کر بہت خوشی بھی ملتی ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اگلی ہالیڈے کا منصوبہ ابھی تو نہیں بنایا لیکن جب بھی گیا اور کسی کو بھی مدد کی ضرورت پڑی تو میں تیار ہوں۔

ڈاکٹر راشد ریاض نے کہا کہ ہر طیارے میں ایمرجنسی فزیشن کٹ ہونی چاہئے جس میں بلڈ پریشر اور شوگر کو چیک کرنے کے مانیٹر کے علاوہ ایپس پین ہونا چاہئے کیونکہ یہ اشیاء جان بچانے میں بہت مدد کرتی ہیں۔ اگر کوئی شخص طیارے میں بیمار ہو جائے اور ڈاکٹر پرواز پر موجود بھی ہو تو بھی وہ اشیاء کے بغیر مریض کی جان نہیں بچا سکتا۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button