جہلم کی سڑکوں اور چوراہوں میں سٹالز لگا کر سر عام غیر قانونی طور پر موبائل سموں فروخت

جہلم کی سڑکوں اور چوراہوں میں سٹالز لگا کر سر عام غیر قانونی طور پر موبائل سموں فروخت کی جارہی ہیں۔ قانون نافذ کرنے والے ادارے غیر قانونی موبائلز سمزکارڈ فروخت کرنے والوں کے خلاف کارروائیاں کریں۔

شہرکے چوک چوراہوں میں جگہ جگہ سٹالز لگے نظرآتے ہیں۔ نوجوانوں اور خوبصورت دوشیزاؤں کو موبائل سمز فروخت کرنے پر لگا دیا گیا ہے جبکہ شہریوں کے انگوٹھوں کے نشانات لگوا کر اس کا غلط فائدہ اٹھایا جاتا ہے۔

فراڈیئے نوسر باز انگوٹھوں کے نشانات لگوا کر اس کا غلط فائدہ لیتے ہوئے شہریوں کو بھاری رقوم سے محروم کر چکے ہیں۔ جس سے اے ٹی ایم مشینوں سے کیش نکلوانے کے ساتھ ساتھ غلط اور غیر قانونی کاموں میں استعمال کرنے کیلئے سمیں مبینہ طور پر اپنے نام کروا لی جاتی ہیں۔

شہر کے اہم چوک چوراہوں میں با اثر افراد نے موبائل سمز فروخت کرنے کے سٹالز لگا رکھے ہیں۔ جہاں بائیو میٹرک کیلئے مرد و خواتین کے انگھوٹھوں کے نشانات لگوائے جاتے ہیں اور نشانات کی ڈبلنگ کی جاتی ہے۔ جعل سازی سے اے ٹی ایم کے ذریعے ہزاروں بلکہ لاکھوں روپے نکلوانے کے کئی واقعات سامنے آچکے ہیں۔

اس امر پر شہریوں نے آئی جی پنجاب، آر پی او راولپنڈی سے نوٹس لیکر سمز فروخت کر نیوالے مافیا کے خلاف بھر پور کار روائیاں کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button