دبئی میں گرل فرینڈ کو قتل کرنے والے شخص کو سزائے موت

دبئی: متحدہ عرب امارات کی ریاست دبئی میں تعلق ختم کرنے کی خواہش پر گرل فرینڈ کو قتل کرنے والے شخص کو سزائے موت سنادی گئی۔

اماراتی میڈیا کے مطابق جولائی 2020ء میں پیش آنے والے ایک واقعے میں ایک عرب شخص کو دبئی کی فوجداری عدالت نے اپنی یورپین گرل فرینڈ کے قتل کے جرم میں موت کی سزا سنائی ہے، انتقامی کارروائی میں نوجوان نے اپنی گرل فرینڈ کی جان لی کیوں کہ وہ کسی دوسرے شخص کے ساتھ تعلقات کی وجہ سے اس کے ساتھ تعلق ختم کرنا چاہتی تھی۔

بتایا گیا ہے کہ مجرم نے قتل کی پہلے سے منصوبہ بندی کی اور کئی دنوں تک اس لڑکی کا پیچھا کیا، اپنی گرل فرینڈ کی حرکات پر گہری نظر رکھی، قتل کے روز وہ اس کے گھر میں داخل ہوا اور اس کی گردن کاٹ کر اس کی آنتیں چیر ڈالیں، عمارت میں رہنے والے ایک رہائشی نے ساتویں منزل پر گڑبڑ کی اطلاع سکیورٹی گارڈ کو دی، جائے وقوعہ پر پہنچنے پر گارڈ کو سیڑھیوں کے قریب خون ملا، اس نے سیڑھیوں کا دروازہ کھولنے کی کوشش کی لیکن نہ کھول سکا، اس کے بعد وہ دوسری منزل سے اوپر گیا اور مقتول کو زمین پر خون میں لت پت پڑا پایا، گارڈ نے فوری طور پر دبئی پولیس کو اس جرم کی اطلاع دی۔

معلوم ہوا ہے کہ پولیس نے نعش قبضہ میں لے کر جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کرنا شروع کر دیئے، ایک پولیس افسر نے بتایا کہ ایک تفتیشی ٹیم نے کافی شواہد اکٹھے کیے، ملزم کی شناخت کی اور اسے ایک شاپنگ مال کے قریب سے گرفتار کرلیا، ملزم نے 2017ء سے متاثرہ لڑکی کے ساتھ تعلقات کا اعتراف کیا لیکن اسے سوشل میڈیا کے ذریعے پتا چلا کہ وہ دوسروں سے ملتی ہے اور اس سے تعلقات ختم کرنے کی کوشش کررہی ہے لیکن مجرم نے انکار کر دیا اور لڑکی کا تعاقب جاری رکھا، جس کی وجہ سے لڑکی جلد ہی مسلسل دھمکیوں سے بچنے کیلئے ملک چھوڑ کر چلی گئی لیکن دو سال بعد مجرم کو پتا چلا کہ وہ دبئی میں کام پر واپس آگئی ہے۔

بتایا جارہا ہے کہ لڑکی کی واپسی کا پتا چلنے کے بعد مجرم نے اسے تلاش کیا اور اس کے دفتر جا پہنچا جہاں لڑکی نے صلح کرنے پر رضامندی ظاہر کی اور 55 ہزار درہم قرض کی درخواست کی، تاہم لڑکا صرف 30 ہزار درہم ہی قرضہ دے سکا کیوں کہ حال ہی میں اس کی ملازمت ختم ہو گئی تھی لیکن اسے رقم ادھار دینے کے بعد لڑکے کو اپنی گرل فرینڈ کے کسی دوسرے شخص کے ساتھ ملوث ہونے کا پتا چلا اس کی وجہ سے زبانی جھگڑا ہوا جس کے نتیجے میں لڑکی نے ایک بار پھر اپنے تعلقات ختم کرنے کا فیصلہ کیا اور اس نے ادھار کی رقم بھی واپس کر دی۔

تفتیش سے پتا چلا کہ لڑکی کی جانب سے تعلق ختم کیے جانے کے بعد غصے میں آکر وہ شخص بدلہ لینا چاہتا تھا، اسی دوران ایک دن وہ اس لڑکی کے اپارٹمنٹ میں داخل ہوا، اس کا سامنا کرتے ہوئے اس نے اسے اپنے تعلقات کو دوبارہ شروع کرنے اور کسی دوسرے شخص کے ساتھ تعلقات ختم کرنے پر مجبور کیا اور یہ مطالبہ کرنے کے بعد وہ وہاں سے چلا گیا، جس پر لڑکی نے اسے ڈرانے کے لیے پولیس میں رپورٹ کی۔

پولیس سے وعدہ کرنے کے باوجود کہ وہ دوبارہ اس کے قریب نہیں جائے گا یا اسے دھمکائے گا وہ شخص دنوں بعد ہی واپس آیا اور واقعے کے دن مجرم نے لڑکی کو ایک چاقو دکھاتے ہوئے دھمکی دی کہ اس نے یہ اسے قتل کرنے کے لیے خریدے ہیں لیکن اس کے باوجود جب اس نے لڑکے کی بات نہ مانی تو وہ اسے گھسیٹ کر لے گیا اور عمارت کی سیڑھیوں پر اس کی جان لے لی۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button