جہلم میں جنگلی و آبی پرندوں اور نایاب نسل کے جانوروں کا غیر قانونی شکار

جہلم: جنگلی و آبی پرندوں کا غیر قانونی شکار، سرحدی اضلاع سے جنگلی و آبی پرندوں کو شکار کر کے گوشت بڑے شہروں میں سپلائی ہونے لگا۔

ضلع جہلم اور سرحدی اضلاع گجرات ، میرپور، راولپنڈی کی شکار گاہوں سے مرغابی، مگ، نیل مرغ، تلیر، چڑیاں، بٹیرے، تیتر ، خرگوش، و دیگر جنگلی و آبی پرندوں کابند وقوں اور جال کے ذریعے شکار کر کے لگثر ی گاڑیوں کے ذریعے راولپنڈی، گجرات، گوجرانوالہ، لاہورکے دکانداروں کو فروخت کیا جارہاہے ۔

اس کی وجہ سے جنگلی و آبی پرندوں اور نایاب نسل کے جانوروں کی نسل ختم ہوتی جارہی ہے جس کی وجہ سے ماحول کی خوبصورتی بھی ماند پڑتی جارہی ہے ۔

علاقہ مکینوں نے نگران وزیراعلیٰ پنجاب، ایڈوائزر محتسب پنجاب جہلم سے مطالبہ کیا کہ ان خوبصورت پرندوں و جانوروں کا غیر قانونی شکار بند کرایا جائے اور شکاریوں کی سرپرستی کرنے والے محکمہ شکار کے افسران کو ضلع بدر کیا جائے تاکہ پرندوں و جنگلی جانوروں کی نسل کشی کا سلسلہ بند ہو سکے۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button