وزراء سے عدم تعاون کی دھمکی، کیمرون کا بیان چھوٹا پن ہے، حمزہ یوسف

گلاسگو: سکاٹ لینڈ کے فرسٹ منسٹر حمزہ یوسف نے سکاٹش وزرا کے بیرون ملک دوروں کے دوران برطانوی حکومت کا تعاون واپس لینے کی دھمکی کے بیان کو وزیر خارجہ ڈیوڈ کیمرون کا چھوٹا پن اور گمراہ کن قرار دیا ہے اور وضاحت کی کہ میری ترک صدر سےجن امور پر بات ہوئی،ان پر دیگرپلیٹ فارمز پربھی بات ہوچکی ہے۔

حمزہ یوسف وزیر خارجہ ڈیوڈ کیمرون کے ان دعوئوں کا جواب دے رہے تھےکہ انہوں نے ترک وزیراعظم طیب اردگان اور بعض دیگر حکام سے برطانوی وزارت خارجہ کے کسی نمائندے کی عدم موجودگی میں ملاقات کرکے سفارتی آداب کی خلاف ورزی کی ہے۔ ڈیوڈکیمرون نے بیرون ملک برطانوی سفارت خانوں میں سکاٹش حکومت کے دفاتر بند کرنے کی بھی دھمکی دی تھی۔ سکاٹش سیکرٹری ایلسٹر جیک نے بھی سکاٹش حکومت پرکلائمنٹ سمٹ کے دوران پروٹوکول کی خلاف ورزیوں کے الزامات لگائے تھے۔

حمزہ یوسف کا کہنا تھا کہ ترک صدر طیب اردگان کے ساتھ ان کی میٹنگ کو ایک مختصر نوٹس پر ترتیب دیا گیا تھا اور ان کو برطانوی وزیر خارجہ سمیت برطانوی حکومت کے کسی بھی نمائندے کی شمولیت پر کوئی مسئلہ نہ تھا۔ فارن، کامن ویلتھ اینڈ ڈویلپمنٹ آفس کے حکام نے سکاٹش وفد کے ساتھ سارا دن نہ رہنے کا فیصلہ کیا تھا اور اسی وجہ سے وہ ملاقات سے محروم رہے۔ میری ترک وزیراعظم کےساتھ جن معاملات پر بات ہوئی مثلاً موسمیاتی بحران اور خصوصی طور پر غزہ کا معاملہ ان سب ایشوز پر دیگر پلیٹ فارمز پر بھی بات ہو چکی تھی۔

حمزہ یوسف نے کہا کہ اگر مستقبل میں اس طرح کا کوئی معاملہ ہو تواس کو صرف ایک ٹیلی فون کال کے ذریعے حل کیا جاسکتا ہے۔ حمزہ یوسف نے اس کانفرنس میں دیگر چند اعلیٰ حکام کے علاوہ پاکستان کے وزیراعظم انوار الحق کاکڑ سے بھی بات کی تھی۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button