مشکلات ہر قوم کو پیش آتی ہیں، توقع رکھیں ہم ضرور کامیاب ہوں گے، ڈاکٹر محمد فیصل

لندن کے مقامی ہوٹل میں یوکے بزنس پاکستان کونسل نے پاکستان ہائی کمشنر ڈاکٹر محمد فیصل کے اعزاز میں عشائیہ کا اہتمام کیا۔ تقریب میں لندن کی معروف کاروباری مرد و خواتین شخصیات نے شرکت کی۔

مہمان خصوصی ہائی کمشنر ڈاکٹر محمد فیصل نے تقریب میں آئے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مجھے آپ سب سے مل کر بہت خوشی ہوئی اور میں خصوصی طور پر عطا حق اور یوکے پاکستان بزنس کونسل اور ان کی ٹیم کے ساتھ ساتھ تمام شرکاء کا بھی خصوصی طور پر شکریہ ادا کرتا ہوں جنہوں نے اپنی مصروف زندگی سے وقت نکالا اور یہاں تشریف لائے ، ہمیں اپنے رویوں میں تبدیلی لانا ہو گی مانا کہ ہمیں چیلنجز کا سامنا ہے لیکن مشکلات کس قوم کو پیش نہیں ہیں ؟۔

انہوں نے کہا کہ مشکلات ہماری محنت سے کم ہوتی ہیں اور میں آپ لوگوں سے توقع رکھتا ہوں کہ آپ سب بھی یہ توقع رکھیں کہ ہم کامیاب ہوں گے ،اگر اپ یہاں پر برطانیہ میں متحد رہیں گے تو کامیاب بھی ہوں گے ۔ سفیر آتے ہیں چلے جاتے ہیں، لیکن اپ لوگوں نے یہیں رہنا ہے اپ کی یونٹی آپ کے اپنے کاروبار میں کامیابی پاکستان کی کامیابی تصور کی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ آپ کے بچے پڑھ کر اس نظام کو اڈاپٹ کریں گے، آگے بڑھیں گے ،کامیاب ہوں گے، اتنے ہی پاکستان کی سٹرینتھ بنیں گے، ہمارے لوگ یہاں پر مضبوط ہوں گے تو پاکستان مضبوط ہوگا، پاکستان میں آئی ٹی کا بہت کام ہو رہا ہے، میں اپ کو مدعو کروں گا، ہمارے ٹریڈ منسٹر شفیق جو یہاں پر موجود ہیں، ان کی پوری ٹیم ہے تو ہارڈویئر میں ایون مائکرو چپس پاکستان میں بہت کام کر رہی ہے۔

ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ میں برطانیہ سے پہلے جرمنی میں تین سال رہا ہوں، لوگ شاید نہیں جانتے ہوں گے کہ پاکستان پانچ کروڑ فٹبال ہر سال باہر بھیجتا ہے ، آپ لوگوں میں بہت پوٹینشل ہےہمیں منفی سرگرمیوں اورباتوں کو نظر انداز کر کے اب اگے چلنا ہے، اپ کی کامیابی ہی میٹر کرتی ہے، ہم اپ کے ساتھ اور اپ کے پیچھے کھڑے ہیں، الیکشن انشاءاللہ 08فروری کو ہونے جا رہے ہیں اس کے فورا بعد ہماری خواہش ہے کہ یہاں سے ہائی لیول ایکسچینج ہو۔

انہوں نے کہا کہ برطانیہ سے پاکستان اور پاکستان سے برطانیہ بزنس ڈیلیگیشن ائیں لہٰذا میں اپ کو دعوت دیتا ہوں کہ یوکے پاکستان بزنس کونسل کے جو کلیدی ممبران ہیں یا جو لوگ انٹرسٹڈ ہیں ہم ان کو ساتھ لے جائیں گے یا پاکستان سے ڈیلیگیشن لائیں گے تو یہاں اپ کو ملوا دیں گے۔ کوویڈ کے دنوں میں یہ زوم میٹنگ اور اس پو بڑا کام ہوا، اب وہ مسئلہ ختم ہو گیا ہے، اب فزیکل انٹریکشن کے بڑے چانسز ہیں اور ہم اس کو پوری طرح سپورٹ کرتے ہیں پاکستان میں ٹورزم کا پوٹینشل ہے، ہمیں ٹور اپریٹر نہیں ملتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ گلگت ، سیف الملوک ، ہڑپہ ، موئنجو دڑو بےشمار سیاحی مقامات ہیں جو کھلے ہوئے ہیں، میں نے جب کرتاپور پر کام شروع کیا تو بہت مخالفت بھی ملی ، ہم بڑے جذباتی سے لوگ ہیں کچھ لوگ ایک طرف چلے جاتے ہیں تو کچھ دوسری طرف لیکن اگر ہم مسمم ارادہ کر لیں ہے تو ہر ناممکن کو بھی ممکن بنا سکتے ہیں ، کوشش کرنی پڑتی ہے من مارنا پڑتا ہے محنت کرنی پڑتی ہے اس کے خلاف بھی لوگ ہوتے ہیں ان کا مقابلہ کرنا پڑتا ہے۔ اللہ تعالی اپ کو کامیاب کرے آپ جب بھی مجھے بلایں گے تو ضرور آپ کے درمیان بیٹھوں گا۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے یوکے بزنس پاکستان کونسل کے صدر عطا حق کا کہنا تھا کہ ہم نے اپنی اس تنظم کی بنیاد تب رکھی جب کورونا میں پوری دنیا اپنے گھروں تک محدود ہو کر رہ گئی تھی ۔ عطا حق نے خصوصی طور پر ہائی کمیشن لندن میں ٹریڈ منسٹر شفیق شہزادکا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ٹریڈ منسٹر نے اس وقت ہماری رہنمائی فرمائی جب فزیکلی طور پر کسی بھی تنظیم کا آغاز کرنا ناممکن تھا لیکن انھوں نے آن لائن زوم کے ذریعے ویبینارز اور آن لائن میٹنگز کا اہتمام کیا ۔ ہم نے آن لائن اپنے ایونٹس کروائے بزنس کمیونٹی کو اکٹھا کیا۔

عطا حق کا مزید کہنا تھا کہ ہماری یوکے بزنس پاکستان کونسل کی پالیسی ہے کہ ہمارا کسی بھی سیاسی جماعت سے کوئی تعلق نہیں ہے، ہمارے لیے جو سیٹنگ گورنمنٹ یا سیٹنگ پرائم منسٹر ہو گا وہی ہمارا پرائم منسٹر اور گورنمنٹ ہو گی ، پاکستان ہائی کمیشن لندن میں ہمارا منی پاکستان ہے اور اوورسیز پاکستانی ہوتے ہوئے میں سمجھتا ہوں، وہی ہمارا پاکستان ہے اور ہماری خواہش ہوتی ہے کہ ہمیں پاکستان ہائی کمیشن سے رہنمائی کرتے رہیں اور ہم پاکستان کی خدمت کرتے رہیں۔

انہوں نے کہا کہ جس طریقے سے ہائی کمیشن ڈاکٹر محمد فیصل نے آج یہاں سے برطانیہ میں اپنی مقامی ایکٹیوٹیز کا آغاز کیا ہے، میں آپکو یقین دلاتا ہوں کہ یہاں رائل نواب میں کمیونٹی کے بہت زیادہ ایونٹس ہوتے ہیں جہاں پر پاکستانیوں کی بہت بڑی تعداد ہمشہ ہی اکٹھی رہتی ہے ۔ اور انشاءاللہ اپ کو بہت سے مختلف گروپ بہت مختلف ارگنائزیشنز اپ کو ویلکم کریں گے ۔

انہوں نے کہا کہ یو کے پاکستان بزنس کونسل کیساتھ ساتھ ہماری لوکل کمیونٹی بھی آپ کے شانہ بشانہ کھڑی رہے گی، ہمارا مقصد ایک ہی ہے کہ کیسے پاکستان میں سرمایہ کاری کو یقینی بنا کر پاکستان میں سرمایہ کاری کو محفوظ بنایا جا سکتا ہے۔ میں خاص طور پر اپنی پاک افواج کو خراج تحسین پیش کرنا چاہتا ہوں، کہ انہوں نے جو بزنس کمیونٹی کے لئے انویسٹمنٹ کا ایک خصوصی پلیٹ فارم بنایا ہے ہم ان کی اس کاوش کو سراتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اگر پاک فوج کی ہمیں سپورٹ رہے گی تو ہم سرمایہ کاری سے متعلق جو مستقبل کا پلان ہے اسے کامیابی کیساتھ سرانجام دے سکیں گے برازیل اور گلاسگو سمیت یورپ اور یو اے ای سے ہمارے ساتھ آن بورڈ ہیں ہمیں آپ کی تجاویز اور فیڈ بیک بھی ضروری چائیے ہوتا ہے کہ ہماری تنظیم سے آپ کی کیا ایکسپیکٹیشن ہیں، ہم کیسے یہاں بیٹھ کر پاکستان کی حکومت سے ملکر پاکستان کی خدمت کر سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی خدمت کیلئے آپ سب کو بھی ہمارے ساتھ شانہ بشانہ چلنا ہو گا جس کیلئے میری درخواست ہے کہ جو بھی بزنس کمیونٹی کے لوگ ہیں وہ آگے ائیں اور ہمیں جوائن کریں کیونکہ یوکے پاکستان بزنس کونسل ہی وہ واحد نیٹورکنگ کی بیسٹ تنظیم ہے جو آپ کو اور آپ کے بزنس کو آگے بڑھنے کے بہترین مواقع مہیا کرنے کا پلیٹ فارم ہے ہماری یوکے پاکستان بزنس کونسل ایک نیٹ ورکنگ پلیٹ فارم ہے۔ہم اپنے تمام ممبران کو ویلکم کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اللہ کا شکر ہے پورے یوکے میں ہماری ون ممبر ون بزنس کیوں پالیسی ہے اور الحمدللہ 500 سے زیادہ بزنسز لندن ، برایزل اور گلاسگو سمیت یورپ اور یو اے ای سے ہمارے ساتھ آن بورڈ ہیں ہمیں آپ کی تجاویز اور فیڈ بیک بھی ضروری چائیے ہوتا ہے کہ ہماری تنظیم سے آپ کی کیا ایکسپیکٹیشن ہیں ہم کیسے یہاں بیٹھ کر پاکستان کی حکومت سے مل کر پاکستان کی خدمت کر سکتے ہیں ۔ پاکستان کی خدمت کیلئے آپ سب کو بھی ہمارے ساتھ شانہ بشانہ چلنا ہو گا جس کیلئے میری درخواست ہے کہ جو بھی بزنس کمیونٹی کے لوگ ہیں وہ آگے ائیں اور ہمیں جوائن کریں کیونکہ یوکے پاکستان بزنس کونسل ہی وہ واحد نیٹورکنگ کی بیسٹ تنظیم ہے جو آپ کو اور آپ کے بزنس کو آگے بڑھنے کے بہترین مواقع مہیا کرنے کا پلیٹ فارم ہے۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button