ڈی ایس پی کا بیٹا بدمعاش بن گیا، تین مختلف واقعات میں فائرنگ اور تشدد، عوام کا جینا مشکل بنا دیا

جہلم: ڈی ایس پی ٹریفک راولپنڈی ابرار قریشی کے بیٹے آفاق ابرار نے قانون سے کھیلنا معمول بنا لیا ہے، دو ماہ کے دوران تین مختلف واقعات میں فائرنگ اور تشدد سے عوام کا جینا مشکل بنا دیا ہے، تھانہ صدر جہلم میں اقدام قتل،معذور عورت پر تشدد اور سوہاوہ میں فائرنگ کا مقدمہ درج ہے لیکن ملزمان تاحال آزاد ہیں۔ ڈی ایس پی ابرار قریشی کی آشیرباد سے ہونے والے واقعات کے بارے میں محکمانہ کارروائی کےلیے آئی جی آفس کو لکھ دیا ہے، ڈی پی او ناصر محمود باجوہ کا موقف۔

تفصیلات کے مطابق جہلم تھانہ صدر کی حدود میں ڈیرھ ماہ پہلے شیخ قریشیاں میں ڈی ایس پی ٹریفک راولپنڈی ابرار قریشی کے بیٹے آفاق ابرار نے ایک معذور عورت کو تشدد کا نشانہ بنایا جس کا گواہ حماد نامی نوجوان تھا گواہی سے نہ رکنے پر ڈی ایس پی کی آشیرباد پر اس کے بیٹے آفاق ابرار نے حماد پر فائرنگ کی جس کے نتیجہ میں حماد اور اس کا دوست ارمان گولیاں لگنے سے شدید زخمی ہوئے تھے۔

تھانہ صدر پولیس نے ڈی ایس پی ابرار قریشی اس کے بیٹے آفاق ابرار اور نامعمول ملزنان کے خلاف فائرنگ کا مقدمہ تو درج کر لیا تھا لیکن معذور عورت پر تشدد کا مقدمہ ابھی تک درج نہیں ہو سکا اور نہ ہی ابھی تک ملزمان گرفتار ہوئے ہیں۔

چند روز قبل ساجد قریشی، حماد وغیرہ ڈی ایس پی سوہاوہ کے پاس انکوائری میں پیش ہونے کےلیے گئے تھے جب واپس آ رہے تھے تو ابرار قریشی کے بیٹے آفاق ابرار نے ساتھیوں کے ہمراہ ساجد اور حماد وغیرہ کا پیچھا کرکے ان پر فائرنگ کی لیکن خوش قسمتی سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تھا۔ اس واقعہ کا بھی پولیس نے ٹال مٹول کے بعد مقدمہ تو درج کر لیا ہے لیکن بااثر ملزمان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔

اس حوالے سے ڈی پی او جہلم ناصر محمود باجوہ نے کہا ہے کہ آئی جی آفس کو ڈی ایس پی ابرار قریشی کے بارے لکھا ہے کہ اس کے خلاف محکمانہ کارروائی کی جائے ملزمان کے مقدمات کی انکوائریاں ہو رہی ہے جلد ملزمان کو گرفتار کر لیں گے۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button