الیکشن کمیشن نے جہلم کے حلقہ این اے 61 کا بھی حتمی نتیجہ روک دیا

پنڈدادنخان: الیکشن کمیشن آف پاکستان نے حلقہ این اے 60 کے بعد ریٹرننگ افسر کو جہلم کے حلقہ این اے 61 کا بھی حتمی نتیجہ جاری کرنے سے روک دیا۔

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن میں انتخابی عذرداریوں سے متعلق درخواستوں پر سماعت ہوئی۔ حلقہ این اے 61 جہلم ٹو سے پاکستان تحریک انصاف کے حمایت یافتہ آزاد شوکت اقبال مرزا نے درخواست دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ فارم 45کے مطابق حلقہ این اے 61 جہلم ٹو سے میری ووٹوں کا اندراج کم کیا گیا، 9 ہزار سے زائد ووٹ مسترد کئے گئے اور میری جیت کو ہار میں تبدیل کر دیا گیا۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ریٹرننگ افسر کو جہلم کے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 61 جہلم ٹو کا حتمی نتیجہ روک دیا۔

واضح رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے حمایت یافتہ آزاد امیدوار شوکت اقبال مرزا اور مسلم لیگ (ن) کے امیدوار چوہدری فرخ الطاف کے درمیان مقابلہ ہوا تھا جس پر این اے 61 جہلم سے مسلم لیگ ن کے امیدوار چوہدری فرخ الطاف نے 3 ہزار 454 ووٹوں کی لیڈ سے مخالف امیدوار کو شکست دی تھی تاہم اس حلقے سے 9 ہزار 659 ووٹوں کو مسترد شمار کیا گیا جبکہ ریٹرننگ آفیسر نے حتمی نتیجہ (فارم 49) بھی جاری کر دیا ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ریٹرننگ افسر کو جہلم کے حلقہ این اے 61 کا حتمی نتیجہ جاری کرنے سے روک دیا تھا۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button