جہلم میں کھاد مافیا بے لگام، یوریا کھاد ضلع بھر میں نایاب ہو گئی

جہلم: محکمہ زراعت کے ذمہ داران صرف دفاتر تک محدود ہو کر رہ گئے، پودوں کے ذریعہ اہلکار کمائیاں کرنے میں مصروف، شہر سمیت ضلع بھر میں کھاد مافیا کھاد کی بلیک میں فروخت، ناجائز منافع خور کسانوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے میں سرگرم ہیں جبکہ کسان سراپا احتجاج ہیں۔

تفصیلات کے مطابق جہلم شہر سمیت ضلع بھر میں کھاد مافیا ایک بار پھر ضلعی انتظامیہ کے قابو سے باہر ہو گیا، سونا یوریا کھادضلع بھر میں نایاب ہوگئی، گندم کی فصل کو اس وقت یوریا کھاد کی اشد ضرورت ہے۔

کھاد مافیا کے گوداموں میں کھاد کے انبار لگے ہوئے ہیں اور اسوقت کسان یوریا کھاد کی ایک ایک بوری کے لیے ترس رہے ہیں، کسانوں کا استحصال کرتے ہوئے کھاد مافیا کھاد سٹا ک کر کے کھاد پر پنجے جمائے بیٹھا ہے جبکہ ضلعی انتظامیہ کھاد کی فراہمی میں مکمل ناکام نظر آتی ہے۔

سونا یوریا کھاد کی سرکاری قیمت 3450 ہے جبکہ مارکیٹ میں نان رجسٹرڈ ڈیلرز 5000 روپے میں فروخت کر رہے ہیں، گوارا کھاد کی قیمت 3210 روپے مقرر ہونے کی باوجود بلیک میں 4300 روپے میں فروخت کی جارہی ہے۔

یوریا کھاد کی قلت یونہی جاری رہی تو گندم کی فصل کی پیداوار شدید متاثر ہوگی اور غذائی قلت کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button