افسر شاہی نے کلاس فور ملازمین کی زندگیاں اور نوکریاں مشکل بنا دیں، حاجی افضل بلوچ

جہلم: افسر شاہی نے غریب چھوٹے کلاس فور ملازمین کیلئے انکی زندگیاں اور نوکریاں دونوں مشکل بنا دیں ، پاکستان میں جس طرح غریب ہونا جرم ہے اسی طرح چھوٹا ملازم ہونا بھی جرم بن گیا۔

ان خیالات کا اظہار حاجی محمد افضل بلوچ سرپرست اعلیٰ شمالی پنجاب آل پاکستان آل محکمہ جات کلاس فور ایسوسی ایشن نے بذریعہ ٹیلیفون جہلم پریس کلب کے صحافیوں سے مدینہ منورہ سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے موجودہ نگران صوبائی حکومت پنجاب اور ڈپٹی کمشنر سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ضلع جہلم کی افسر شاہی نے غریب چھوٹے کلاس فور ملازمین کیلئے انکی زندگیاں اور نوکریاں دونوں مشکل بنا دی ہیں ، جس طرح غریب ہونا جرم ہے اسی طرح چھوٹا ملازم بھرتی ہونا بھی جرم بن چکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ ماہ چیف ایگزیکٹو آفیسر ایجوکیشن دفتر میں نصب پانی والی موٹر جوکہ دفتر کے کمپاؤنڈ سے باہر نصب تھی کسی نے اتار لی کیونکہ اس طرف کبھی کوئی شخص نہیں جاتا، موٹر دن کو اتری لیکن رات کی ڈیوٹی کرنے والے ملازم کو نوکری سے معطل کر دیا گیاسوال یہ ہے کہ دفتر کی پچھلی طرف یہ موٹر کیوں لگائی گئی اور مذکورہ موٹر کو ٹیوب ویل کے اندر کیوں نہیں نصب کیا گیا۔ جبکہ چوکیدار کی ذمہ داری مخصوص احاطہ یعنی باؤ نڈری کے اندر ہوتی ہے اس چوکیدار کونوکری سے معطل کرنا سراسر ناانصافی ہے۔

انہوں نے ڈپٹی کمشنر، چیف ایگزیکٹو آفیسر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ جہلم سے مطالبہ کیا ہے کہ اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرتے ہوئے درجہ چہارم کے ملازم کو نوکری پر بحال کرنے کے احکامات جاری کئے جائیں اور عمارت کے اندر اور باہر سی سی ٹی وی کیمرے نصب کروائے جائیں تاکہ چوری چکار ی کرنے والے افراد کی نشاندہی ہو سکے ۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button