سردی کی شدت میں اضافے کے ساتھ ہی جہلم میں سے گیس غائب

جہلم: سردی کی شدت میں اضافے کے ساتھ ہی شہر سمیت ملحقہ آبادیوں میں سے گیس غائب، غیر اعلانیہ لوشیڈنگ اور گیس کے پریشر میں کمی کے باعث صارفین کے چولہے ٹھنڈے پڑ گئے، گھریلو صارفین نے گیس کا پریشر بڑھانے اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ فوری ختم کرنے کا مطالبہ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق شہر سمیت ملحقہ آبادیوجن میں مشین محلہ 1,2,3 شمالی محلہ ، پروفیسر کالونی ، بلال ٹاؤن، کالا گجراں، جادہ، سعیلہ، محمود آباد، مدینہ ٹاؤن ، محلہ سلیمان پارس سمیت ملحقہ آبادیوں کے مکینوں نے بتایا کہ گیس کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اور کم پریشرکے باعث صبح کا ناشتہ اور دو پہر کا کھانے کا وقت ہوتا ہے گیس پریشر اتنا کم کردیا ہے کہ اس پر کھانا پکانا کسی صورت ممکن نہیں ہوتا۔

صارفین نے کہا کہ گھریلو خواتین پریشانیوں میں مبتلا ہیں کیونکہ عین کھانے کے وقت گیس کی بندش ان کیلئے مسلسل عذاب کا باعث بن رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ سکول جانیوالے بچوں اور ملازمت و روزگار اور محنت مزدوروی کے لئے گھر سے نکلنے والے افراد کو ناشتہ بھی فراہم نہیں کیا جاسکتا اور جب وہ دو پہر یا سہ پہر کو گھروں کو لوٹتے ہیں تو گیس کی بندش سے دو پہر کا کھانا بھی میسر نہیں ہوتا جس پر شہریوں میں چڑ چڑا پن بھی بڑھتا جا رہا ہے۔

شہریوں نے نگران وزیراعظم پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ گھریلو صارفین کو فل پریشر کے ساتھ گیس فراہم کی جائے اور غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کو فوری طور پر بند کیا جائے۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button