ایس ایچ او کالاگجراں ہمارے اوپر ظلم کے پہاڑ توڑ رہا ہے، جنید مظہر

جہلم: جنید مظہر نے کہا کہ تھانہ کالا گجراں پولیس نے گزشتہ ماہ میرے چھوٹے بھائی بلال مظہر کو نامعلوم مقدمے میں حراست میں لے کر ہمیں فون کرکے تھانہ کالا گجراں بلوایا اور 10ہزار روپے ڈیمانڈ کی جوہم نے ادا کردیے، اس کے بعد تھانہ کالا گجراں کی پولیس کے تفتیشی افسرنے رابط کیا اور مزید 2لاکھ روپے طلب پہچانے کا کہا کہ اگر آپ رقم ادا کردیں تو آپکے بھائی کو مقدمے سےبیگناہ کردیں گے۔

تھانہ چوٹالہ کے علاقہ گڑھا سلیم کے رہاشی جنید مظہر نے اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ میں نے بتایا کہ چند ہفتے قبل میرے بھائی افراسیاب کو گوجر خان میں ناحق قتل کردیا گیا تھا ہم اس پریشانی میں مبتلا ہیں اور ہمارے اتنے وسائل نہیں کہ ہم رشوت دے کر اپنے بھائی کو چھڑائیں اگر اس نے جرم کیا ہے تو اسے ضرور سزا ملنی چاہیے اور اگر وہ بیگناہ ھے تو اسے ڈر خوف نہیں۔

جنید مظہر نے بتایا کہ ہمارے اس جواب کے بعد پولیس والوں نے کہا کہ اگر رقم ادا نہ کی تو 7/8مقدمات میں اسے شامل کرلیں گے اور تم پوری زندگی یاد رکھو گے کہ تمہارے ساتھ ہوا کیاتھا۔ ہم نے رشوت دینے سے صاف انکار کردیا جس کی وجہ سے اب تھانہ کالا گجراں پولیس کا روزانہ کامعمول ہے، وہ روزانہ کی بنیاد پر ہمیں فون کرتے ہیں اور فون پر ہمارے بھائی پرہونے والے تشددکی آوازیں چیخیں سناتے ہیں اورہمارے بھائی کو غلیظ گالیاں نکالنی شروع کر دیتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز 7/8پولیس ملازم جنہوں نے وردیاں پہن رکھی تھیں جبکہ 2سفید کپڑوں میں تھے، کوئی لیڈی پولیس ساتھ نہیں تھی، کوئی سرچ وارنٹ نہیں تھا، دندناتے ہوئے چادر چاردیواری کاتقدس مال کرتے ہوئے ہمارے گھر داخل ہوئے، اس طرح پولیس ملازمین نے ہمارے گاؤں میں تماشہ لگایا لوگ گلی محلے کے جمع ہوگئے۔

متاثرہ شخص نے بتایا کہ پولیس ملازمین نےگھر موجود خواتین کو گندی غلیظ گالیاں نکالنی شروع کردیں کمروں میں موجود سامان ادھر ادھر پھینکنا شروع کردیا اور کمروں اور سامان کی تلاشی لیتے رہے۔ اس دوران پولیس والے ہمارے گھر میں موجود 2موٹرسائیکلیں اور سی سی ٹی وی کیمروں کاڈی وی آر بھی اٹھا کرساتھ لے گئے، ایس ایچ او کالاگجراں ہمارے اوپر ظلم کے پہاڑ توڑ رہا ہے۔

متاثرہ شخص جنید مظہر نے نگران وزیراعلی پنجاب، انسپکٹر جنرل پنجاب پولیس ڈاکٹر عثمان انور، ریجنل پولیس آفیسر راولپنڈی ریجن اور ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ناصر محمود باجوہ سے نوٹس لینے اور تھانہ کالاگجراں میں نافذ جنگل کے قانون کے خاتمے کا مطالبہ کیا ہے۔

موقف جانے کےلیے پولیس ترجمان سب انسپکٹر مدثر خان سے رابط قائم کیاگیا تو انہوں نے بتایا ملزم کے خلاف تھانہ کالا گجراں میں مقدمہ درج ہے اور شناخت پریڈ کے بعد ریمانڈ پر ہے۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button