یوم یکجہتی کشمیر نئے جذبوں کے ساتھ منایا جائے، حاجی قربان

لوٹن: کوآرڈینیٹر کشمیر سالیڈیرٹی کمپین لوٹن حاجی چوہدری محمد قربان نے کہا ہے کہ ماضی کی طرح اس سال بھی یوم یکجہتی کشمیر برطانیہ کی پاکستانی اور کشمیری کمیونٹی بھرپور طریقے سے منائے گی اور کشمیری عوام کو ان کا پیدائشی حق خودارادیت دینے کا مطالبہ دہرایا جائے گا۔

اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ پچھلے کئی سال سے 5فروری کو پاکستانی عوام اور حکومت ہم کشمیری عوام کے ساتھ یکجہتی کا مظاہرہ کرتی ہے جس پر ہم کشمیری پاکستانی عوام اور حکومتوں کے مشکور ہیں تاہم بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے، مقبوضہ کشمیر کو عملی طور پر ایک وسیع جیل خانہ میں تبدیل کرنے، لاک ڈاؤن کے نفاذ اور ہر طرح کی شہری آزادیوں کو پامال کرنے کے باعث اس دن کی اہمیت میں مزید اضافہ ہوگیا ہے جس باعث پاکستانی حکومت اور اس کے عوام پر کشمیر کے حوالے ذمہ داریوں میں اضافہ ہو گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس موقع پر پاکستان بھر میں عام تعطیل کی جاتی ہے جبکہ اس دن کی مناسبت سے پاکستان اور آزاد کشمیر، مقبوضہ کشمیر کے علاوہ برطانیہ اور دیگر ممالک میں پاکستانی کشمیری بھرپور جذبے سے ریلیوں، جلسوں، سیمینارز اور دیگر تقاریب کے ذریعے بھارتی مظالم کے خلاف احتجاج کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اب کشمیر پر ورچوئل سیمینارز اور پروگرام بھی تسلسل سے منعقد کیے جارہے ہیں تاہم مقبوضہ کشمیر میں کئی لاکھ بھارتی افواج کھلے عام دہشت گردی کررہی ہے، اور مقبوضہ کشمیر کو ایک وسیع جیل خانہ میں تبدیل کر دیا گیا ہے جے کے ایل ایف کے چیئرمین محمد یاسین ملک سمیت کشمیر کی مرکزی سیاسی لیڈر شپ کو جیلوں میں قید رکھا جا رہا ہے کشمیری نوجوانوں کو شہید کیا جارہا ہے ہماری عفت مآب خواتین کی عصمت دری کی جاتی ہے، بچوں پر تعلیمی اداروں کو بند کر دیا جاتا ہے آئے روز کے کرفیو سے سول سوسائٹی کا جینا دوبھر کر دیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھارت نے ہر طرح کے جبر و ظلم سے کشمیری عوام کی آواز دبانے کی کوشش کی ہے۔انہوں نے کہا کہ وہ توقع کرتے ہیں کہ ماضی کی اس سال بھی اسلام آباد، مظفر آباد سمیت مختلف شہروں میں 5 فروری پر ریلیاں نکالیں گے، مظفرآباد، لندن اور برسلز میں بھی پروگرام ہوں گے۔

حاجی چوہدری محمد قربان نے کہا کہ پاکستانیوں اور کشمیری باشندوں کو جو اوورسیز میں رہتے ہیں وہ لندن، واشنگٹن اور ہر اہم مقام پر اس دن کو احتجاج کر کے پوری دنیا کو مقبوضہ کشمیر کی صورتحال سے بھرپور طریقے سے آگاہ کریں۔ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کو بھی کشمیری عوام کی محکومی یاد دلائی جائے ۔یوم یکجہتی کشمیر نئے جوش اور جذبے سے منایا جائے تاکہ دنیا بھارت پر دباؤ ڈال کر کشمیریوں کو ان کا حق رائے شماری دے ۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کو اس سازش کو بے نقاب کرنے کے لیے سفارتی سرگرمیوں کو تیز تر کرنا چاہیے انہوں نے کہا کہ ہم مقبوضہ کشمیر کے غیور عوام کو سلام پیش کرتے ہیں کہ اب تک بےشمار شہادتوں اور ان گنت قربانیوں کے باوجود الحاق پاکستان کے نعرے اور نظریے پر کاربند ہیں انہوں نے کہا کہ ویسے تو ہر وقت پاکستانی پرچم مقبوضہ وادی کشمیر کے گلی محلوں و گھروں میں لہراتا ہے مگر 5 فروری کو بطور خاص ہر گھر میں پاکستانی پرچم لہرایا جاتا ہے اور انڈین فوج کی ایک سپیشل ونگ ان پرچموں کو اتارتی ہے مگر کشمیری پھر اس سبز ہلالی پرچم کو لہراتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم اس موقع پر پاکستان کے عوام کو بھی خراج پیش کرتے ہیں کہ جہاں 5فروری کو کشمیری غیور مسلمان بھارت و سلامتی کونسل کی وعدہ خلافی کے خلاف پوری دنیا میں احتجاج کرتے ہیں وہاں پاکستانی قوم بھی اپنے کشمیری بھائیوں کیساتھ سلامتی کونسل و بھارت کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے ہمارے ساتھ یکجہتی کا مظاہرہ کرتے ہیں اور دنیا کو باور کرواتے ہیں کہ کشمیری پاکستانی یک دل اور یک جان ہیں۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button