ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جہلم کی خاموشی، اشٹام فروش شہریوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے لگے

جہلم: ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر کی خاموشی ، اشٹام فروشوں نے شہریوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنا شروع کر دیا ۔ 300روپے والااشٹام پیپر 1 ہزار روپے تک فروخت ہونے لگا، اسی طرح دیگر مالیت کے اشٹام پیپرز بھی بھاری قیمت پر فروخت کئے جارہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرکی عدم توجہی کیوجہ سے اشٹام پیپر پر بھاری رشوت وصول کی جارہی ہے ، قابل ذکر امر یہ ہے کہ اشٹام فروشوں کے خلاف کارروائیاں کرنے کے مجاز افسران نے شہریوں کو اشٹام فروشوں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا ہے جس کیوجہ سے اشٹام فروش من مرضی کے پیسے وصول کرکے شہریوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے میں مصروف ہیں ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اشٹام وینڈر نے مختلف یونین کونسلز کے لائسنس حاصل کررکھ ہیں لیکن متعلقہ محکمہ کے آشیر باد سے یونین کونسلز کے علاقوں میں بیٹھنے کی بجائے ضلع کچہری کی ہر نکڑ پر دفتر قائم کرکے شہریوں کی جیبوں کا صفایا کرنا شروع کررکھا ہے ۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ اشٹام وائنڈرز شہریوں سے بھاری رقم وصول کرکے 100/300 والے اشٹام پیپرز پر تحریر کرکے تھما دیتے ہیں اگر کوئی شہری بحث ومباحثہ کرکے تو اسے لالی پاپ دیکر ٹرخا دیا جاتا ہے۔

شہریوں نے ڈپٹی کمشنر کیپٹن (ر) سمیع اللہ فاروق ، ایڈوائزر صوبائی محتسب پنجاب جہلم سے نوٹس لینے اور اضافی پیسے وصول کرنے والے اشٹام وائنڈرز کے لائسنس منسوخ کرنے اور اپنی اپنی یونین کونسلز میں دفاتر قائم کرنے کا مطالبہ کیاہے کہ تاکہ شہریوں کو ان کی یونین کونسل پر سہولت میسر آسکے۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button