جہلم میں غیر قانونی منی پٹرول ایجنسی مالکان اور دکانوں پر کھلے عام پٹرول کی فروخت جاری

جہلم: محکمہ سول ڈیفنس کی ملی بھگت و نا اہلی یا غفلت جہلم شہر سمیت ضلع بھر کے علاقوں میں حفاظتی آلات کے بغیر کھلے عام کم پیمانہ زائد قیمت کے ساتھ غیر قانونی منی پٹرول ایجنسی مالکان اور دکانوں پر کھلے عام پٹرول کی فروخت کا کارروبار جاری ہے۔ غیر قانونی منی پٹرول ایجنسیوں کے مالکان نے 282 روپے والا پٹرول 300 روپے فی لیٹرفروخت کر کے لوگوں کی جیبوں پر ڈاکہ ڈالنا شروع کررکھا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جہلم شہر سمیت ضلع بھرکے علاقوں میں جگہ جگہ بااثرافراد نے غیر قانونی پٹرول ایجنسیاں قائم کر رکھی ہیںجبکہ ان غیر قانونی ایجنسیوں پر کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے کوئی حفاظتی آلات موجود نہ ہیں بلکہ غیر قانونی پٹرول ایجنسی مالکان ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے مہنگائی اور بے روزگاری میں پسی ہوئی عوام کو تقریبا ً282 والا پٹرول 300 روپے فی لیٹر کے حساب سے فروخت کر کے حالات سے پریشان لوگوں کی جیبوں پر ڈاکہ ڈالنے میں مصروف عمل ہیں۔

اس سنگین صورتحال کو جانتے ہوئے بھی سول ڈیفنس کے افسران واہلکاروں سمیت دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں نے بھی آنکھیں بند کر رکھی ہیں۔

گنجان آباداور دوردرازکے علاقوں میں کھلے عام غیر قانونی پٹرول ایجنسیوں کا قیام اداروں کی ملی بھگت نا اہلی یا غفلت کا منہ بولتا ثبوت ہیں جو کسی بھی وقت لوگوں کی جان و مال کے لیے خطرناک ثابت ہو سکتا ہے۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button