ضلعی انتظامیہ جہلم شہر کی رونقیں بحال کرنے میں مگن، اندورنی علاقوں کی سڑکوں کو بھلا بیٹھے

جہلم: ضلعی انتظامیہ شہر کی رونقیں بحال کرنے میں مگن ، اندورنی علاقوں کی سڑکوں کو بھلابیٹھے۔ متعدد علاقوں کو جوڑنے والی رابطہ سڑکیں عدم توجہی کے باعث ٹوٹ پھوٹ کا شکار، شہریوں کی قیمتی گاڑیاں ، موٹر سائیکلیں کھٹارہ بننے لگیں، شہریوں کو آمدورفت میں شدید دشواری کا سامنا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ضلعی انتظامیہ جہلم شہر کو حسین بنانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ شہر کی سڑکیں ، چوک چوراہے تعمیر ہو چکے ہیں جبکہ اندرونی علاقوں کی اہم رابطہ سڑکیں جن میں کمیلا روڈ، قبرستان روڈ، ڈھوک جمعہ روڈ انتہائی خستہ حال ہونے سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہو چکی ہیں ۔

مذکورہ سڑکوں میں سیوریج کا نظام بھی انتہائی ناگفتہ بہ ہے جس کیوجہ سے گٹروں کا گندہ پانی سڑکوں ، گلی محلوں میں جمع ہونے سے سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہونے کے ساتھ ساتھ بیماریاں پھیلنے کا بھی باعث بن رہی ہیں ۔

شہریوں کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ ن لیگ کے دور میں جب سیوریج سسٹم کے منصوبے پر کام شروع ہوا تو منتخب ممبران نے معیاری کام کروانے کی بجائے اپنی کمیشن وصول کرنے کی غرض سے شہر کے گلی محلوں کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا ، محکمہ پبلک ہیلتھ انجینئرنگ کے ذمہ داران اور ٹھیکیداروں نے ناقص منصوبہ بندی کے تحت سیوریج لائنیں بچھائیں۔

شہریوں نے کہا کہ چند ماہ بعد ہی سیوریج پائپ لائنیں ناقص حکمت عملی کیوجہ سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہو گئیں اور تعمیر ہونے والی سڑکیں بھی زمین بوس ہونا شروع ہو گئیں ، اس طرح کروڑوں روپے کا قومی خزانے کو نقصان پہنچایا گیا۔ محکمہ پبلک ہیلتھ انجینئرنگ کے ذمہ داران مال بناؤ ڈنگ ٹپاؤ پالیسی پر عمل پیرا ہونے کیوجہ سے شہری آج بھی اس عذاب کو بھگت رہے ہیں۔

شہریوں نے نگران وزیراعلیٰ پنجاب، ضلعی انتظامیہ سمیت ارباب اختیار سے مطالبہ کیاہے کہ جس طرح شہر کی اہم سڑکوں کے لئے فنڈز جاری کروا کر سڑکیں تعمیر کی گئیں اسی طرح اندرون شہر کی رابطہ سڑکوں کی تعمیر اور سیوریج لائنوں کی درستگی کے لئے فنڈز جاری کروائے جائیں تاکہ سڑکوں اور سیوریج لائنوں کو از سر نو تعمیر کروا کے شہریوں کو مشکلات سے چھٹکارہ دلوایا جائے تا کہ جہلم بھی ترقی یافتہ شہروں کی فہرست میں شامل ہو سکے ۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button