اپنے حالات بدلنے کے لئے عوام ایک دفعہ جماعت اسلامی کو موقع دیں، ڈاکٹر قاسم محمود چوہدری

دینہ: ڈاکٹر قاسم محمود چوہدری نے کہا کہ الیکشن کا اعلان ہو چکا ہے، 2018 سے لے کر 2023 تک سب پارٹیوں نے ملک پاکستان میں اقتدار کے مزے لوٹے مگر کسی نے بھی عوامی مسائل پر توجہ نہیں دی، اپنے حالات بدلنے کے لئے ایک دفعہ جماعت اسلامی کو موقع دیں۔

جماعت اسلامی پاکستان ضلع جہلم کے امیر ڈاکٹر قاسم محمود چوہدری نے جماعت اسلامی کے مرکزی دفتر جی ٹی روڈ دینہ میں افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حلقے کے شہریوں نے گزشتہ پانچ سالہ دور حکومت دیکھ لیا، ہر طرف مہنگائی کا دور دورہ تھا۔ ادویات کی قیمتوں میں اضافہ، بجلی کی قیمتوں میں اضافہ، پٹرول کی قیمتوں میں اضافہ، ڈالر کہاں سے کہاں پہنچ گیا۔

انہوں نے کہا کہ یہ کیسے حکمران تھے جو اقتدار کے لیے پاکستان آتے ہیں اور اقتدار ختم ہونے کے بعد پاکستان سے دوسرے ملکوں کا رخ کر لیتے ہیں اور وہاں پر اقتدار کے بعد بھی عیاشی و موجیں کرتے رہتے ہیں، یہ لوگ انتخابات کے آنے پر دودھ و شہد کی نہریں بہانے کے دعوے کرتے ہیں مگر جب اقتدار میں آجاتے ہیں تو عوام کو بھول جاتے ہیں۔

ڈاکٹر قاسم محمود نے کہا کہ عوام ان لوگوں کو منتخب کریں جو آپ کے درمیان رہتے ہیں، ایماندار ہیں، مشکل وقت میں آپ کے کام آتے ہیں، سیلاب ہو یا پاکستان کا اور کوئی مسئلہ ہو، مسئلہ فلسطین ہو جماعت اسلامی ہمیشہ آگے آگے ہوتی ہے۔ اگر آپ نے اپنے حالات بدلنے ہیں تو الیکشن 2024 میں جماعت اسلامی کو ووٹ دے کر کامیاب بنائیں، ایک موقع تو دیں آپ واضح فرق محسوس کریں گے۔

امیر جماعت اسلامی جہلم نے کہا کہ آج ملک میں معیشت تباہی کے دہانے پر پہنچ چکی ہے، ہر طرف نفسا نفسی کا عالم ہے، آپ سے پھر اپیل کروں گا کہ الیکشن کے دن ترازو پر مہر لگا کر جماعت اسلامی کو کامیاب بنائیں، انشاء للہ ہم وعدہ کرتے ہیں ہمارے منشور میں شامل ہے کہ اسمبلی میں پہنچ کر معاوضہ نہیں لیں گے بلکہ یہ معاوضہ عوام پر خرچ کریں گے۔

ڈاکٹر قاسم محمود نے کہا کہ جماعت اسلامی کی حکومت آ گئی تو چوروں اور ڈاکوؤں کے پیٹ سے آپ کی دولت نکال کر آپ پر خرچ کریں گے، ہماری حکومت میں ایس ایچ او، تحصیلدار، ڈی پی او، کمشنر سب عوام کو جواب دہ ہوں گے۔ آج تو یہ لوگ عوام سے رشوت وصول کر کے حکومتی نمائندوں کا پیٹ بھر رہے ہیں، انشاء اللہ جماعت اسلامی کی حکومت آنے کے بعد کوئی آپ کا کوئی بھی حق نہیں مار سکے گا، ہم جو کہتے ہیں کر دکھاتے ہیں۔

اس موقع پر جماعت اسلامی کے امیدوارسید ضیاء اللہ بخاری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میرے دوستو، بزرگوں اور نوجوانوں فرق سمجھیں، ہماری جماعت اور دوسری جماعتوں میں فرق محسوس کریں۔ جن عدالتوں نے، اسٹیبلشمنٹ نے ایک انسان کو چور ڈاکو کلیئر کر کے بیرون ملک بھیج دیا تھا۔ آج وہی بندہ ملک میں واپس آکر انہی عدالتوں اور اسٹیبلشمنٹ کی وجہ سے پاک صاف ہو رہا ہے، کیا پہلے فیصلہ غلط تھا یا اب غلط ہے؟۔

انہوں نے کہا کہ میرے خیال کے مطابق دونوں فیصلے غلط ہیں، یہ لوگ عوام کی تقدیر سے کھیلتے ہیں۔ سب فوج کی پیداوار ہیں، کوئی گھڑی چور ہے، کوئی ہار چور ہے، سب چور ہیں۔ مظلوموں کا خون چوسا جاتا ہے، کسی کو عوام کی پرواہ نہیں، آج آپ کو گلیوں اور سڑکوں کے مسائل ہیں، گرین پاسپورٹ کی کوئی عزت نہیں رہی۔

انہوں نے کہا کہ آئیے جماعت اسلامی کو کامیاب کر کے اپنے مستقبل کو بچائیں، ان چوروں اور ڈاکوؤں کو ہرگز ہرگز ووٹ نہ دیں بصورت دیگر پچھتاوے کے علاوہ کچھ بھی حاصل نہ ہوگا۔

اس تقریب میں جماعت اسلامی کے عہدیداران اور شہریوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button