جہلم: غیر رجسٹرڈ بیوٹی کریموں، ٹیکوں اور ادویات کے استعمال پر پابندی

جہلم: وزیر پرائمری و سیکنڈری ہیلتھ کیئر پنجاب نے غیر رجسٹرڈ بیوٹی کریموں، ٹیکوں اور ادویات کے استعمال پر پابندی عائد کرنے کے احکامات جاری کر دیئے ، بیوٹی انجکشن لگانے والے غیر مستند افراد اور غیر رجسٹرڈ بیوٹی پارلرز مالکان کیخلاف کریک ڈاؤن تیز کرنے کا حکم بھی دیدیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق جہلم سمیت پنجاب بھر کے تمام اضلاع میں تمام بیوٹی پارلرز کی قانونی حیثیت چیک کرنے ،بیوٹی پارلرز کا حفظان صحت کے اصولوں کے مطابق کام کرنا یقینی بنایا جائے،اس مقصد کیلئے ہیلتھ کیئر کمیشن کی مشاورت سے بیوٹی پارلرز کیلئے ایس او پیز تیار کیے جائیں۔

محکمہ صحت پنجاب کے ارباب اختیار نے ضلعی ڈرگز کوالٹی کنٹرول بورڈز کے سیکرٹریز کی کانفرنس سے بطور مہمان خصوصی سیکرٹری ہیلتھ علی جان خان ، ڈی جی ڈرگز کنٹرول محمد سہیل ، ایڈیشنل سیکرٹری قلندر خان ، سیکرٹری کوالٹی بورڈ ڈاکٹر منور حیات ، اظہر جمال سلیمی اور دیگر نے شرکت کی۔

اس موقع پر ڈاکٹر جمال ناصر نے کہا کہ صرف کوالیفائیڈ سکن اسپشلسٹ اور سرجن کو ہی بیوٹی انجیکشن لگانے کی اجازت ہے۔کوئی نان کوالیفائیڈ بیوٹیشن سکن کیئر انجکشن نہیں لگا سکتا۔ منظور شدہ بیوٹی انجکشن کے علاوہ دوسرے انجکشن استعمال کرنیوالوں کے خلاف کارروائیاں کی جائیں۔غیر معیاری بیوٹی کریمیں پیچیدہ بیماریوں حتیٰ کہ کینسر کا باعث بن رہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ غیر معیاری کاسمیٹکس ،بیوٹی کریموں، اور انجکشنز کے بارے میں سخت پالیسی اختیار کی جائے گی۔ کاسمیٹک کریموں کی تیاری کیلئے بھی ایس او پیز تیار کئے جائیں۔کاسمیٹک کریمیں بنانیوالوں کو لائسنس جاری کئے جائیں۔تمام بیوٹی پارلرز اور ہیئر سیلونز کے ملازمین کی ہیپاٹائٹس سکیننگ کی جائے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ضلعی کوالٹی کنٹرول بورڈز کے سیکرٹری اپنے اپنے اضلاع کے ہسپتا لوں کیلئے معیاری ادویات کی شفاف طور پر خریداری یقینی بنائیں۔ ادویات محفوظ رکھنے کیلئے ویئر ہاؤسز کی استعداد میں بھی اضافہ کر رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button