عالمی اردو مرکز جدہ کی طارق محمود کے اعزاز میں تقریب

جدہ: عالمی اردو مرکز جدہ نے "سلسلہ تکلم” کے حوالے سے پاکستان سے آئے مہمان طارق محمود کے اعزاز میں تقریب منعقد کی گئی جس کا آغاز تلاوت قرآن پاک سے ہوا ،قاری محمد آصف نے تلاوت کی سعادت حاصل کی ۔ نعت رسول مقبول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نواز جنجوعہ نے پیش کی اور کلام اقبال احمد بن زبیر نے پڑھا۔

سلسلہ تکلم عالمی اردو مرکز ہر ماہ باقاعدگی سے کیا کرتی تھی کورونا وباء کی وجہ سے یہ سلسلہ منقطع ہو گیا تھا۔طارق محمود جو ان دنوں عمرہ کی سعادت حاصل کرنےاور روضہ رسول مقبول ﷺ پر حاضری دینے کے لیے مملکت میں تشریف لائے ہوئے ہیں اس سے قبل 4دہائیوں تک سعودی عرب میں مقیم رہے ہیں۔

وہ مختلف ادبی و سماجی تنظیموں سے وابستہ رہے ہیں علامہ محمد اقبال سے خصوصی انسیت رکھتے ہیں۔ انکی ہمیشہ سے یہی کوشش رہی ہے کہ شاعر مشرق کے پیغام کو نوجوان نسل تک پہنچائی جائے۔انہوں نے اپنے خطاب میں اس بات پر زور دیا کہ ہم ان باتوں کی طرف توجہ دیں جس میں مذہبی اختلافات نہ پایا جاتا ہو۔

انہوں نے مختلف احادیث کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ صفائی ستھرائی، رزق حلال کا حصول، معاشرے میں بھائی چارے کی فضاء اور قرض جیسی لعنت سے دور رہنے کے لیے لوگوں کو آگاہی دینے کا کام کیا جائے کیونکہ آج ہمارے معاشرے میں قرض لینے کا رجحان پروان چڑھ رہا ہے اور کریڈٹ کارڈ اس کا ذریعہ ہے جبکہ سود کے لین دین کوہمارے دین نے منع کیا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ وطن عزیز آج قرض کی دلدل میں پھنسا ہے، پہلی دفعہ جب قرض لیا گیا تھا اگر اس وقت علماء کرام حکومت کو سمجھاتے اور دانشور کالم لکھتے تو آج حالات یکسر مختلف ہوتے۔

تقریب کی صدارت جناب قارق مونس نے کی۔ عالمی اردو مرکز کے صدر اطہر عباسی نے تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے موجودہ حالات کے تناظر میں اشعار پڑھے جسے حاضرین محفل نے بہت سراہا۔مجلس اقبال کے چیئرمین عامر خورشید نے اپنے خطاب میں مہمان خصوصی طارق محمود کی ادبی خدمات کو سراہتے ہوئے کہا ان ہم عنقریب مجلس اقبال کا ماہانہ پروگرام کا سلسلہ دوبارہ شروع کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

مجلس اقبال کے جنرل سیکرٹری شہاب الدین نے اپنے خطاب میں طارق محمود کی خدمات سے حاضرین محفل کو آگاہ کیا۔ جرنلسٹ فورم کے چیئرمین امیر محمد خان نے طارق محمود کی سماجی خدمات کو سراہتے ہوئے کہا کہ انہوں نے ہمیشہ پاکستان کے حوالے سے جو بھی پروگرام جدہ میں ترتیب دیئے ان میں بھرپور تعاون کیا ۔ پاکستان جرنلسٹ فورم کے سابق صدر شاہد نعیم نے اپنے خیالات کا اظہار کیا اور اپنے اشعار پیش کیے جسے حاضرین محفل نے بہت سراہا۔ جدہ کے مشہور شاعر فیصل طفیل نے بھی اپنے اشعار سے حاضرین محفل کو محظوظ کیا۔

پروگرام کی نظامت محمد امانت اللہ نے کی جو جدہ کے ادبی حلقوں میں طنز و مزاح کے حوالے سے جانے جاتے ہیں۔ انہوں نے اپنا کالم پڑھا جو ملکی صورتحال کی عکاسی کرتا ہے۔پروگرام کے اختتام سے قبل طارق محمود نے وطن عزیز کی سلامتی و خوشحالی اور عالم اسلام کی سربلندی کے لیےخصوصی دعا کی۔پروگرام کا اختتام پرتکلف عشائیہ پر ہوا۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button